آداب و حدود صیام

آداب و حدود صیام


عن عَائِشَةَ رضي الله عنها قالت كان النبي صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَيُقَبِّلُ وَيُبَاشِرُ وهو صَائِمٌ. (بخارى، رقم 1927)

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روايت ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم روزہ كى حالت ميں (ازواج كا) بوسہ بهى لے ليتے اور بغل گير بهى ہو جاتے۔

عن عَائِشَةَ رضي الله عنها قالت كان رسول اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يُقَبِّلُ وهو صَائِمٌ وَيُبَاشِرُ وهو صَائِمٌ. (مسلم، رقم 2576)

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روايت ہے کہ رسول اللہ صلى الله عليہ وسلم روزہ کی حالت میں اپنی ازواج كا بوسہ بهى لے ليتے اور ان سے بغل گیر ہو جاتے۔

عَنْ عَائِشَةَ رضي الله عنها قالت أَشْهَدُ على رسول اللَّهِ صلى الله عليه وسلم إن كان لَيُصْبِحُ جُنُبًا من جِمَاعٍ غَيْرِ احْتِلَامٍ ثُمَّ يَصُومُهُ. (بخارى، رقم 1931)

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روايت ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم بعض اوقات احتلام نہيں، بلكہ جماع كى وجہ سے جنبى ہونے كى حالت ميں صبح كرتے اور روزه ركھ ليتے، پهر فجر سے پہلے غسل كرتے۔

عَنْ عَائِشَةَ وَأُمِّ سَلَمَةَ رضي الله عنهما (قَالَتَا) كَانَ النَّبِيُّ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يُصْبِحُ جُنُبًا من غَيْرِ حُلُمٍ ثُمَّ يَصُومُ. (مسلم، رقم 2589)

حضرت عائشہ اور ام سلمہ رضی اللہ عنہما سے روايت ہےكہ بعض اوقات نبی صلی اللہ علیہ وسلم احتلام کے بغیر (جماع كى وجہ سے)جنبی ہونے کی حالت میں صبح کرتے اور روزہ رکھ ليتے۔

________




Articles by this author