حج کی فضیلت

حج کی فضیلت


عن أبي هُرَيْرَةَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَسُئِلَ أَيُّ الْعَمَلِ أَفْضَلُ فقال إِيمَانٌ بِاللَّهِ وَرَسُولِهِ قِيلَ ثُمَّ مَاذَا قال الْجِهَادُ في سَبِيلِ اللَّهِ قِيلَ ثُمَّ مَاذَا قال حَجٌّ مَبْرُورٌ. (بخارى، رقم 26)

حضرت ابوہریرہ (رضی اللہ عنہ) سے روايت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے دریافت کیا گیا کہ کون سا عمل سب سے افضل ہے؟ آپ نے فرمایا:اللہ اور اس کے رسول پر ایمان لانا، کہا گیا: اس کے بعد کون سا؟ آپ نے فرمایا کہ اللہ کی راہ میں جہاد کرنا،کہا گیا: اس كےبعد ؟ آپ نے فرمایا:حج مبرور۔

عن أبي هُرَيْرَةَ قال سُئِلَ رسول اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أَيُّ الْأَعْمَالِ أَفْضَلُ قال إِيمَانٌ بِاللَّهِ قال ثُمَّ مَاذَا قال الْجِهَادُ في سَبِيلِ اللَّهِ قال ثُمَّ مَاذَا قال حَجٌّ مَبْرُورٌ. (مسلم، رقم 248)

حضرت ابو ہريره (رضى الله عنہ) سے روايت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے پوچھا گیا کہ اعمال میں سب سے افضل عمل کون سا ہے؟ آپ نے فرمایا: اللہ تعالیٰ پر ایمان لانا،عرض کیا گیا: پھر؟ آپ نے فرمایا: اللہ کے راستے میں جہاد کرنا، عرض کیا گیا: پھر؟ آپ نے فرمایا: حج مبرور (سچا حج)۔

عن أبي هُرَيْرَةَ رضي الله عنه قال قال رسول اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ من حَجَّ هذا الْبَيْتَ فلم يَرْفُثْ ولم يَفْسُقْ رَجَعَ كيوم وَلَدَتْهُ أُمُّهُ. (بخارى، رقم 1819)

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روايت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: جس شخص نے اس گھر (کعبہ) کا حج کیا اور اس میں نہ شہوت کی بات منہ سے نکالی اور نہ کوئی گناہ کا کام کیا تو وہ اس طرح گناہوں سے پاك ہو كر لوٹے گا، جيسا وه اس دن تها جس دن اس کی ماں نے اسے جنا تھا۔

عن أبي هُرَيْرَةَ قال قال رسول اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ من أتى هذا الْبَيْتَ فلم يَرْفُثْ ولم يَفْسُقْ رَجَعَ كما وَلَدَتْهُ أُمُّهُ. (مسلم، رقم 3291)

حضرت ابوہریرہ (رضی اللہ عنہ) سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:جو آدمی بیت اللہ آئے اور پھر نہ وہ كوئى شہوت كى بات منہ سے نكالےاور نہ وہ گناہ كا كوئى کام ہى کرے تو وہ بیت اللہ سے اس طرح لوٹتا ہے،جس طرح اس كى ماں نے اسےآج جنا ہے۔

________




Articles by this author