حلق و نحر

حلق و نحر


عن الْمِسْوَرِ رضي الله عنه أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ نَحَرَ قبل أَنْ يَحْلِقَ وَأَمَرَ أَصْحَابَهُ بِذَلِكَ. (بخارى، رقم 1811)

حضرت مسور رضی اللہ عنہ سے روايت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے (صلح حدیبیہ کے موقع پر) سر منڈوانے سے پہلے قربانى کی تھی اور آپ نے اپنے اصحاب کو بھی اسی کا حکم دیا تھا۔

عن عَبْدِ اللَّهِ بنِ عُمَرَ رضي الله عنهما قال خَرَجْنَا مع النبي صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ مُعْتَمِرِينَ فَحَالَ كُفَّارُ قُرَيْشٍ دُونَ الْبَيْتِ فَنَحَرَ رسول اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بُدْنَهُ وَحَلَقَ رَأْسَهُ. (بخارى، رقم 1812)

حضرت عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہما سے روايت ہے کہ ہم رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ عمرہ کا احرام باندھ کر گئے تهےاور کفارقریش نے ہمیں بیت اللہ سے روک دیا تها تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنی قربانی كى اور سر منڈایا۔

________




Articles by this author