کیا توبہ گناہوں کو مٹا دیتی ہے؟

قرآن و حدیث کے مطابق اس شخص کا معاملہ کیا ہو گا جو کوئی گناہ کر بیٹھے لیکن پھر اس پر نادم و شرمسار ہو کر اللہ سے سچی توبہ کرے ؟ کیا اللہ ایسے شخص کو معاف کر دے گا ؟اور کیا روزِ قیامت اس شخص کے نامۂ اعمال میں وہ گناہ شامل ہو گا یا اسے مٹادیا جائے گا؟

پڑھیے۔۔۔