اللہ سے دوستی کی شرط

میرا نام ارسلان ہے اور میری عمر 23 سال ہے ۔مجھے ایک عجیب سے مسئلے اور سوال کا سامنا ہے ، جسے آپ کے سامنے پیش کر رہا ہوں ۔امید ہے کہ آپ کوئی تسلی بخش جواب اور رہنمائی دیں گے ۔

میں اللہ تعالیٰ، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اور اللہ تعالیٰ کی تمام ہدایات پر پختہ یقین رکھتا ہوں ، لیکن اس کے باوجود میں ہر وقت گنا ہوں میں گھرا رہتا ہوں اور میں نماز بھی نہیں پڑھتا۔ میرے کئی دوست ہیں لیکن میں محسوس کرتا ہوں کہ ان میں سے کوئی بھی میرے ساتھ مخلص نہیں ہے۔ دو ،تیندن پہلے مجھے اچانک خیال ہوا کہ مجھے اللہ تعالیٰ کو اپنا دوست بنانا چاہیے ، لہٰذا اب میں تنہائی میں اللہ تعالیٰ سے باتیں کرتا ہوں اور اپنا تمام دکھ درد اس کے سامنے پیش کرتا ہوں ، لیکن اس کے باوجود میں نے نہ ابھی تک نماز پڑ ھنی شروع کی ہے اور نہ میرا طرزِ زندگی بدلا ہے۔ کیا آپ بتا سکتے ہیں کہ اللہ تعالیٰ میرے جیسے گناہگارکی باتیں سنتا ہے؟ کیا اللہ تعالیٰ ہر شخص سے پیار کرتا ہے یا صرف ان سے کرتا ہے جو نیک ہوتے ہیں؟ میرے ان سوالوں کا جواب ضرور دیجیے گا، چاہے اس کے لیے مجھے دس سال تک انتظار کرنا پڑ ے۔

پڑھیے۔۔۔