عورت کا بال کٹوانا

میں آپ سے چند سوالات پوچھنا چاہتا ہوں۔ پہلا یہ کہ میں نے المورد کی سائٹ پر عورتوں کے بال کٹوانے سے متعلق ایک آرٹیکل پڑھا تھا جس میں حضرت عائشہؓ کے بال کٹوانے کا ذکر ہے۔ برائے مہربانی اس حدیث کا حوالہ بھی دیجیے جس سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ حضرت عائشہؓ نے نبیؐ کی وفات کے بعد اپنے بال کٹوائے تھے۔ میرا دوسرا سوال داہنے ہاتھ سے کھانے کی سنت سے متعلق ہے۔ کیا یہ سنت پوری کرنا صرف اس وقت ضروری ہے جب ہم کھانے میں صرف اپنے ہاتھ استعمال کر رہے ہوں یا جب ہم کھانے کے لیے چھری کانٹا استعمال کر رہے ہوں تو بھی صرف داہنا ہاتھ ہی استعمال کرنا سنت ہے؟ میرا تیسرا سوال موسیقی سے متعلق ہے۔ سورہ مومنون میں جنتیوں کا کردار بیان کیا گیا ہے جس کی تیسری آیت میں جو لفظ 'اللّغو' استعمال ہوا ہے اس سے متعلق مولانا امین احسن اصلاحی کا کہنا ہے کہ یہ تمام قسم کی لغویات (مباح یا غیر مباح) کے معنوں میں آتا ہے۔ تو گویا موسیقی ایک مباح عمل ہے؟ برائے مہربانی رہنمائی فرمائیں۔

پڑھیے۔۔۔

عمرہ کے دوران بال کٹوانا

ہم اکثر آپ کے جوابات اور آرٹیکلز پڑھتے رہتے ہیں۔ اور ہمیں آپ کے تفصیل سے لکھنے کا طریقہ پسند آیا ہے۔ یہاں جدہ میں ہم ایک بہت بڑے مسئلے میں، جو کہ عمرہ کے بعد بال کٹوانے کے بارے میں ہے، الجھے ہوئے ہیں۔ اور آپ سے اس مسئلے کے جلدی جواب کی درخواست ہے۔ہم جدہ (میقات) میں کئی سال سے کام کر رہے ہیں۔ ہماری عام مشق یہ ہے کہ ہم کمرے سے اہرام باندھ کر مکہ کی طرف عمرہ کے لیے جاتے ہیں۔ پھر وہاں سے براہ راست جدہ اہرام باندھے ہوئے ہی آتے ہیں اور یہاں ہم اپنے بال کٹوا کر اہرام اتارتے ہیں۔ سوال یہ ہے کہ کیا یہ صحیح ہے کہ جدہ ہی میں بال کٹوائے جائیں؟ اور بال کس حد تک کٹوائے جائیں؟ رہنمائی فرمائیے۔

پڑھیے۔۔۔

مصنوعی بالوں والے كا حج ميں بال نہ كاٹنا

میرا سوال یہ ہے کہ کیا كسی عذر كے تحت بال کاٹے یا اتارے بغیر حج یا عمرہ ممکن ہے؟ كيا ايك ايسے شخص كے لئے جس کے بال جوانی کی عمر میں ہی گر گئے ہوں، اور اس نے مصنوعی بال لگوائے ہوئے ہوں، جو کہ نہ کاٹے جا سکتے ہوں اور نہ ہی اتارے جا سکتے ہوں، حج یا عمرہ ميں بال نہ كاٹنا جائز ہے؟

پڑھیے۔۔۔

غیر ضروری بال ریزر سے صاف کرنا

کیا خواتین اپنے غیر ضروری بال ریزر سے صاف کر سکتی ہیں یا شریعت نے کوئی خاص طریقہ متعیّن کیا ہے؟

پڑھیے۔۔۔