تمدنی معاملات میں پیغمبر کی اتباع

حدیث میں ہم اخلاقی اور تمدنی، دونوں طرح کے معاملات کا ذکر دیکھتے ہیں۔ اخلاقی امور تو بلاشبہ ہمارے لیے قابل اتباع ہیں، لیکن کیا تمدن کے بارے میں اتباع لازم ہے؟ مزید یہ کہ اگر ہمارا تمدن انتہائی بگاڑ کا شکار ہو جائے تو کیا ہم دور نبوی کے تمدن کی پیروی کریں گے؟

پڑھیے۔۔۔

ستر سے متعلق

میرا سوال جناب طالب محسن کے ایک جواب سے متعلق ہے، جو کہ ویب سائٹ پر"مرد کا ستر" کے عنوان سے پوسٹ کیا گیا ہے۔ اس میں ایک پیرا گراف میں جناب مصنف نے یہ لکھا ہے کہ کلچرز کے مختلف ہونے کی صورت میں ہمیں اس کلچر کو ترجیح دینی چاہیے جو پیغمبر صلی اللہ علیہ وسلم کے زمانے میں تھا۔ کیوں کہ اسے خدا کی طرف سے تصویب حاصل ہے۔ میرا سوال یہ ہے کہ کیا یہ کلچر خدا کی طرف سے وحی میں محمد صلی اللہ علیہ وسلم کو تصویب ہوا تھا؟ برائے مہربانی وضاحت فرمائیں۔

پڑھیے۔۔۔