داڑھی کا مونڈنا

میں ایک سوال کے بارے میں آپ کی رائے جاننا چاہتا ہوں۔ میں نے غامدی صاحب کو کہتے سنا ہے کہ داڑھی رکھنا احکام دین میں لازم یا فرض نہیں ہے۔ لیکن علامہ راشدی صاحب نے ایک حدیث قدسی بیان کی ہے جس میں یہ کہا گیا ہے کہ "اللہ تعالیٰ فرماتا ہے کہ داڑھی رکھو اور مونچھ کاٹو)۔ برائے مہربانی اس بارے میں اپنا نقطہ نظر بیان فرمائیے۔

پڑھیے۔۔۔

مسلمان مرد کےلیے داڑھی کا حکم

ڈاڑھی کے مسئلے میں ہمارے مذہبی حلقوں میں بالعموم یہ نقطۂ نظر پایا جاتا ہے کہ مسلمان مرد کے لیے ڈاڑھی رکھنا "واجب"یعنیدینی طور پر لازم ہے۔پھر یہ دعویٰ بھی ہمارے معاشرے میں عمومی شہرت رکھتا ہے کہ ڈاڑھی کے بارے میں یہی رائے نہ صرف یہ کہ ائمۂ اربعہ اور اُمت کے تمام فقہا کی ہے،بلکہ مذاہب اربعہ کے تمام علما کا اِس پر اجماع ہے۔یہ بتائیں کہ فقہ اسلامی کی رو سے علمی طور پر ڈاڑھی کے مسئلے میں یہ مقدمہ آیا درست ہے ؟ کیا واقعتاً اِس مسئلےمیں اُمت کا اتفاق ہے ؟ اگر ہے تو اِس کی دلیل کیا ہے ؟ اور اگر نہیں ہے تو یہ بتائیں کہ ڈاڑھی کے مسئلے میں علما ے سلف وخلف نے کیا آرا پیش کی ہیں ؟

پڑھیے۔۔۔

ڈاڑھی رکھنا نہ واجب ہے يا سنت

میرا سوال یہ ہے کہ آپ کہتے ہیں کہ ڈاڑھی رکھنا نہ واجب ہے نہ سنت اور نہ ہی یہ دین ہے۔ آپ سنت کے لئے جو اصول بتاتے ہیں وہ بھی صحیح ہیں لیکن جب میں کسی سے یہ بات کرتا ہوں تو وہ یہ کہتا ہے کہ فلاں حدیث میں نبی صلی اللہ علیہ و سلم نے ایفاء اللحیہ کا حکم دیا ہے- لہذا یہ واجب ہے۔ میں یہ چاہتا ہوں کہ آپ مجھے کوئی اللہ تعالی یا نبی صلی اللہ علیہ و سلم کا کوئی ایسا قول بتائیں کہ جس میں ایک حکم صادر ہوا ہو مگر اتفاق امت سے اسے لازم نہ جانا جاتا ہو بلکہ اسے ہماری صوابدید پر چھوڑا جاتا ہو۔

پڑھیے۔۔۔

اسلام میں داڑھی کی حیثیت

اسلام میں داڑھی کا کیا مقام ہے ؟ کب ا س کا حکم ہوا؟ آپ کے حلقے کے بعض نمائندہ افراد کے مقررہ شرعی داڑھی نہ رکھنے کی وجہ کیا ہے؟

پڑھیے۔۔۔