قرآن كی آيات كا دم كرنا

ميں نے ذندگی ميں اكثر ديكھا ہے كہ لوگ بيمار ہوتے ہيں تو ان پر قرآن كی آيات پڑھ كر دم كيا جاتا ہے۔ جو لوگ يہ كرتے ہيں وه ساتھ ميں يہ كہتے ہيں كہ قرآن مجيد ميں ہر بيماری كا علاج ہے۔ آپ كی اس بارے ميں كيا رائے ہے؟ كيا ايسا كرنا ٹھيك ہے؟ دم كے حوالے سے ايك صحيح حديث ہے جس كا مفہوم يہ ہے كہ نبی صلی الله عليہ و سلم چار قل پڑھ كے اپنے اوپر دم كيا كرتے تھے۔ براہ كرم وضاحت فرمائيں۔

پڑھیے۔۔۔

بچوں کو نظر لگنا

بچوں کو جو نظر لگ جاتی ہے کیا اس کی کوئی حقیقت ہے؟ کہا جاتا ہے کہ بچے کو اگر نظر لگ جائے تو آگ میں کالا دھاگہ جلانے سے نظر ختم ہوجاتی ہے۔ یہ بھی کہا جاتا ہے کہ اگر کوئی شخص وضوکر کے اپنے ہاتھ کی انگلیوں کا پانی بچے پر ڈالے تو نظر اتر جاتی ہے۔ قرآن و سنت کی روشنی میں جواب دیجیے؟

پڑھیے۔۔۔