قطب اور ابدال وغیرہ کو ماننا

غامدی صاحب کی کتاب کا مطالعہ کرتے ہوئے میں نے پڑھا کہ قطب اور ابدال وغیرہ کو ماننا بھی شرک ہے۔ براہ مہربانی اس بات اور اس طرح کے درجات کی وضاحت فرمادیں۔ کیا وہ تدبیر امور کا دعوی کرتے ہیں۔ اگر وہ تدبیر امور نہیں کرتے بلکہ محض اللہ پروردگار عالم کے احکامات نافذ کرتے (قائم الزمان، شاہ ولی اللہ وغیرہ) تو اس بنا کر ان کو ماننا کیسے شرک ہو سکتا ہے۔ فرشتوں کے امور اور ذوالقرنین کے حوالے سے وضاحت فرمادیں۔ شرک کے حوالے سے بھی کوئی کتاب دیں جہاں سب مذاہب کے شرکیہ عقائد کا محکم قرآنی دلائل سے رد کیا گیا ہو اور توحید کا اثبات۔ اسی طرح نجوم کے اثرات کیسے شرک ہوئے۔ کیا یہ نہیں ہو سکتا کہ مختلف تاریخ پیدایش والے لوگوں پر وہ مختلف اثر ڈالتے ہوں اور انسان اپنے شعور کے تحت ان سے بچتا بھی ہو اور لوگوں نے سٹڈی کرکے وہ اثرات مرتب کر لیے ہوں۔

پڑھیے۔۔۔

غیر اللہ سے مدد مانگنے والے

میرا سوال یہ ہے کہ جو مسلم لوگ اللہ تعالٰی کے سوا یا اللہ تعالٰی کے ساتھ کسی بھی بزرگ ہستی (جو اس دنیا میں موجود ہو یا موجود نہ ہو) سے دعا مانگتے ہیں یا ان سے مدد طلب کرتے ہیں، جیسے کہ حضرت شیخ عبدالقادر جیلانیؒ کو اکثر پکارا جاتا ہے، اور ان کے نام کی نذر و نیاز کی جاتی ہے، تو ان لوگوں کے بارہ میں اسلام کیا حکم دیتا ہے؟ ان سے ملنا اور تعلقات رکھنا خدا کی نظروں میں کیسا ہے؟ برائے مہربانی رہنمائی فرمائیے کہ ایسے لوگوں کے ساتھ کیسا رویہ روا رکھنا چاہیے؟

پڑھیے۔۔۔

شرک ناقابل معافی جرم کیوں ہے؟

اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ میرے اس سوال پر مجھے معاف فرمائے۔ میں یہ سوال آسانی سے نہیں اٹھا رہا۔ مگر ایک طالب علم ہونے کے اعتبار سے جاننا ضروری ہے۔ میں یہ جاننا چاہتا ہوں کہ اللہ تعالی ہمارے شرک کرنے کے معاملہ میں اتنے حساس کیوں ہیں۔ وہ اپنی عبادت ہی کرنے پر اتنا زور کیوں دیتے ہیں۔ میں یہ سمجھتا ہوں کہ ایک شکر گزار انسان کے طور پر ہمیں شرک نہیں کرنا چاہیے۔ مگر اللہ تعالی تو ہماری طرف سے اس طرح کی کسی شکر گزاری کے محتاج نہیں ہیں۔ اگر ایک انسان جو مجھ پر احسانات کرے اور پھر اس پر کسی شکرگزاری کی توقع نہ کرے تو اسے بہت بڑا کہا جائے گا۔اللہ تعالی شرک معاف نہیں کرتا۔ وہ تو ان لوگوں کو بھی سزا کی وعید سناتا ہے جو اس کی عبادت تو کریں مگر اس کے ساتھ ساتھ اسی کے کسی پیارے پیغمبر سے محبت میں آگے بڑھ جائیں۔ اتنی سختی کیوں؟ اللہ تعالی شرک معاف کیوں نہیں کر سکتے؟

پڑھیے۔۔۔

چڑهاوے چڑهانا، ديگيں پكانا اور كهلانا

میرا سوال یہ ہے کہ ديگيں پكانا اور ايك دوسرے كو كهانے كهلانا يہ سب شركيہ اعمال کیسے ہیں؟ اللہ کے لیے بھی دیگ پکائی جاتی ہے ۔ سوال نمبر 571 کے جواب میں کہا گیا ہے کہ يہ مشركانہ تصور ہے اور ان كے نام كے چڑهاوے چڑهانا ،ديگيں پكانا اور ايك دوسرے كو كهانے كهلانا يہ سب شركيہ اعمال ہیں۔

پڑھیے۔۔۔

پنجتن پاک کے بارے میں

میں جاننا چاہتی ہوں کہ پنجتن پاک کی کیا حقیقت ہے؟ آپ نے ایک ٹی وی پروگرام میں کہا کہ اسلام میں یہ تصور نہیں ہے۔ پھر میں نے دیگر مسالک (شیعہ کے علاوہ) کے علماء سے معلوم کیا تو وہ کہتے ہیں کہ حدیث (بخاری اور مسلم) میں ہے کہ حضور علیہ السلام نے ایک چادر میں اپنے اہل بیت کو جمع کیا۔ کیا ایسی کوئی حدیث ہے؟ وہ لوگ سورہ احزاب کی آیت 33 کا حوالہ بھی دیتے ہیں۔ جواب حوالوں کے ساتھ تفصیل نے دیجئے۔

پڑھیے۔۔۔

شرک کی دلیل

میں یہ جاننا چاہتا ہوں کہ شرک کی کوئی دلیل نہیں اتاری گئی، یہ بات ہندوؤں کی کتاب گیتا اور دیگر کتابوں ، وحدت الوجود کے تناظر میں خدا کو ماننے والوں پر کس طرح لاگو ہوتی ہے؟ کیا صرف عقلی دلیل کے بارے میں یہ کہا گیا ہے کہ ـ"ما لم ينزل به سلطٰناً"؟ برائے مہربانی وضاحت فرمائیے۔

پڑھیے۔۔۔

ایک سے زیادہ خداؤں کا وجود

میرا سوال یہ ہے کہ کیا ایک خدا کو ماننا کافی ہے؟ کیوں کہ اگر ایک سے زیادہ خدا ہوں تو کائنات کا نظام خراب ہو جائے گااگر فرض کیا جائے تو ایسا بھی تو ہو سکتا ہے کہ اگر ایک سے زیادہ خدا ہوں تو ان کا نظام انسانوں کی طرح کا نہ ہو، اور وہ آپس میں نہ لڑیں؟ برائے مہربانی وضاحت فرمائیں۔

پڑھیے۔۔۔

کفر اور شرک

میرا سوال المورد ویب سائٹ پر پوسٹ کیے گئے ایک جواب سے متعلق ہے جس کا لنک یہ ہے:

http://www.al-mawrid.org/pages/questions_english_detail.php?qid=900&cid=51

اس جواب میں کہا گیا ہے کہ کفر ایک رویہ ہے جو لوگوں کے کسی بھی گروہ پر اثر انداز ہو سکتا ہے۔ اور ایک شخص، اگرچہ وہ کافر ہو یا نہ ہو مشرک ہو سکتا ہے۔ سورہ بیّنہ (۹۸) کی پہلی آیت کے مطابق، "اہل کتاب اور مشرکین میں سے جنہوں نے (قرآن کا) انکار کیا وہ اپنی ہٹ سے باز آنے والے نہیں ہیں، یہاں تک کہ ان کے پاس کھلی ہوئی نشانیاں آ جائیں۔" اسی سورہ کی آیت ۶ میں کہا گیا ہے کہ "بے شک اہل کتاب اور مشرکین میں سے جنہوں نے کفر کیا وہ دوزخ کی آگ میں پڑیں گے، اس میں ہمیشہ رہنے کے لیے، یہی لوگ بدترین خلائق ہیں۔" جب میں ان آیات کا بغور مطالعہ کرتا ہوں تو میں یہ کہہ سکتا ہوں کہ وہ لوگ جنہوں نے قرآن کو جھٹلایا اور اسلام قبول کیا اصل میں انہوں نے قرآن کو جھٹلایا نہیں بلکہ اسے مانا۔ تو اس آیت میں یہ کیوں کہا گیا ہے کہ جنہوں نے قرآن کو جھٹلایا نہیں وہ پھر بھی مشرکین اور اور اہل کتاب ہیں لیکن کافر نہیں ہیں؟َ برائے مہربانی وضاحت فرمائیے۔

میرا دوسرا سوال یہ ہے کہ قرآن میں اللہ تعالیٰ کا فرمان ہے اگر کسی مسلمان نے کسی دوسرے مسلمان کو قتل کیا وہ ہمیشہ جہنم میں رہے گا۔ تو کیا اگر وہ کسی غیر مسلم کو قتل کرے پھر بھی وہ ہمیشہ کے لیے جہنم میں رہے گا؟

نمبر ۳ یہ کہ قرآن و حدیث کے حوالہ کےساتھ یہ بھی بتائیں کہ وہ کون سا گناہ ہے جس کی پاداش میں انسان ہمیشہ کے لیے جہنم میں جائیگا؟

اور نمبر ۴ یہ کہ کیا گناہ چھوٹا ہو یا بڑا سب کی سزا ایک جیسی ہو گی؟

برائے مہربانی تفصیلی وضاحت فرمائیں۔

پڑھیے۔۔۔

مشرک کی تعریف

ہم نے ایک سوال مشرک کے پیچھے نماز پڑھنے کے متعلق بھیجا تھا جس کا جواب ہم نے پڑھا، لیکن اس جواب سے ہمیں صحیح رہنمائی حاصل نہیں ہوئی کیوں کہ جناب ریحان احمد یوسفی صاحب نے شرک کے متعلق قرآنی آیات کو اہل مکہ رسول کے مخاطبین کے ساتھ خاص قرار دیا ہے۔ مجھے اس بات کا اعتراف ہے کہ موجودہ دور کے شرک کرنے والے لوگ مشرک نہیں کہلاتے مگر نماز کے سلسلے میں آپ کا بیان کردہ موقف شک کی بنیاد پر مبنی ہے اور عبادت کے لیے لازمی ہے کہ یہ شک سے پاک ہو۔ مزید یہ کہ شرک کے متعلق آیات میں کوئی مخصوصیات اور استثنا نہیں۔ اگر آپ کا موقف اس کے منافی ہے تو ان آیات پر عمل کرنے کی صورت کیا ہو گی؟ کیوں کہ آپ کا کہنا یہ ہے کہ ان آیات کے مخاطب وہ لوگ تھے جنھوں نے شرک کی حقیقت واضح ہونے کے بعد بھی شرک کو اپنائے رکھا۔ برائے مہربانی اس بات کی وضاحت بھی کریں کہ شرک کیا ہے؟

پڑھیے۔۔۔

قوالی اور قرآن و سنت

کیا اسلامی تعلیمات کی روشنی میں قوالی سننا غلط ہے؟

کسی کے سوال کے جواب میں آپ نے فرمایاکہ ’’اگر شرک اور غیر اخلاقی باتوں کی آمیزش نہ ہو تو موسیقی جائز ہے۔‘‘ مجھے اس حوالے سے یہ پوچھنا ہے کہ کیا قوالی جائز ہے؟ قرآن و سنت اس بارے میں کیا کہتے ہیں؟

پڑھیے۔۔۔