جمہوریت كا اسلامي تصور

غامدی صاحب کا کہنا ہے کہ جمہوریت ٹھیک ہے، جس کی بنیاد اکثریت پر ہے، مگر قرآن میں ہے کہ اکثر لوگ نہیں جانتے، اور یہ بات قرآن میں تقریباً ٩٢ مقامات پر آئی ہے۔ اسی طرح طالوت اور جالوت کا واقعہ ہے کہ جب لوگوں نے کہا کہ جالوت کو ہمارا بادشاہ بنا دیں مگر نبی نے کہا کہ طالوت تمھارا بادشاہ ہو گا۔ یہاں پر اکثریت کی رائے کو پسند نہیں کیا گیا۔ برائے مہربانی وضاحت فرمائیے۔

پڑھیے۔۔۔