زندگی کا مقصد اور بیعت

مجھے اپنے بارے میں ایسا لگتا ہے کہ میں غلط راستے پر چل رہا ہوں، مجھے اپنی زندگی کا کوئی مقصد سمجھ میں نہیں آتا، میں ایک اچھا انسان بننا چاہتا ہوں، لیکن میں کیسے بنوں؟ کسی کے لیے ایک اچھا انسان بننے کا کیا راستہ ہے، کیا اس کے لیے کسی کی بیعت کرنی چاہیے؟

پڑھیے۔۔۔

تخلیق کائنات اور تخلیق آدم ۔ آخر کیوں

محترم ریحان احمد صاحب

اس مفصل تحریر کا شکریہ۔ کاش کہ میں اپنے سوال میں ایک نکتہ کا اور اضافہ کر دیتا تو آپ کے رشحات قلم میرے اشکال کی بیخ تک پہنچ کر میرے اطمینان کا باعث بنتے۔

میں ان تمام معاملات میں خدا کی حکمت کا منکر ہرگز نہیں۔ لیکن سوچتا ہوں کہ خدا نے یہ سب بغیر اپنے فائدہ اور ضرورت کے پیدا کیا۔ کچھ حکمتیں مقر ر کیں اورہم ان حکمتوں کا شکار بنے۔ اس نے جو چاہا کیا ۔ فیل اور پاس کے امکانات بھی اس نے پیدا کیے۔ پھر ہم فیل اور پاس بھی ہوے تاکہ اس کی حکمت کے تقاضے پورے ہوں۔ حکمت تو پوری ہوئی مگر ہمارے نفع نقصان کی قیمت پر۔ خداکو اس سب کے برپا کرنے کی ضرورت نہ تھی نہ ہی ہمیں ضرورت تھی کہ یہ سب برپا ہو۔ ابو بکر بھی تمنا کرتے تھے کہ کاش جنے نا جاتے۔ کچھ ایسا ہی تاثر میرا ہے کہ کاش یہ سب نا ہوتا۔ بھلے ہمیں زندگی نہ ملتی، شعور نہ ملتا، جنت نا ملتی۔ مگر وہ جو ناکام ہوئے وہ بھی نہ ہوتے۔ خدا نے جو چاہا کیا، مگر بلا ضرورت کیا۔ تو کیا یہ رحمانیت ہے؟

محترم میں خدا سے ڈرتا ہوں مگر میں اس سے محبت کرنا چاہتا ہوں۔ اس کا تعارف رحمان اور رحیم سے شروع ہوتا ہے، اور میں ابھی اسی کو نہیں سمجھ پا رہا۔ میں خدا پر اعتراض نہیں کرنا چاہتا، سمجھنا چاہتا ہیں۔جواب درد مندی سے دیجئیے گا۔

پڑھیے۔۔۔