شراب کی حرمت کی اصل علت

میں امریکا میں الکحل کی پابندی کے حوالے سے ایک مضمون لکھ رہا ہوں۔ اس سلسلے میں مجھے ایک استدلال سے سابقہ پیش آیا ہے اور مجھے اس کا جواب دینا ہے۔ یہ لوگ کہتے ہیں کہ اگر ایک آدمی الکحل استعمال کرتا ہے اور سڑک پر کسی کے لیے نقصان کا باعث نہیں بنتا تو اسے الکحل کے استعمال کے حق سے محروم کرنا کیسے درست ہے؟

پڑھیے۔۔۔

غصے کی حالت میں دی گئی طلاق

غصے اور برہمی کی حالت میں دی گئی طلاق کے بارے میں آپ کا کیا نقطۂ نظر ہے (ہمارے ہاں زیادہ تر کیسز اسی نوعیت کے ہوتے ہیں )؟ مختلف اہل علم اس معاملے میں مختلف رائے رکھتے ہیں ، لیکن زیادہ لوگ اس بات کے قائل ہیں کہ ایسی طلاق بہر حال واقع اور مؤثر ہوجاتی ہے۔ حالاں کہ قرآن صاف بتاتا ہے کہ اللہ تعالیٰ بندوں کے ان اعمال کا مواخذہ نہیں کرتا، جو غیر ارادی طور پر وقوع میں آئیں ، وہ صرف ان اعمال کی پرسش کرے گا جو پختہ عزم و ارادے کے ساتھ انجام دیے جائیں ۔مگر روایتی فقہا کا مؤقف یہ ہے کہ طلاق کے معاملے میں نیت اور عزم و ارادے کی کوئی شرط نہیں ہے اور ان کی اس رائے کی بنیاد وہ روایت ہے جو عام طور پر بیان کی جاتی ہے کہ تین چیزوں کے بارے میں کہی ہوئی بات ہر حال میں قبول کی جائے گی: نکاح، طلاق اور غلام کو آزاد کرنے کے معاملے میں ، چاہے یہ بات ہنسی مذاق میں کہی گئی ہو یا سنجیدگی کے ساتھ۔ بعض فقہا غصے کو بھی تین درجات میں تقسیم کرتے ہیں ، لیکن اب یہ فیصلہ کون کرے گا کہ طلاق دیتے وقت شوہر غصے کے کون سے درجے میں تھا؟

پڑھیے۔۔۔