حجاب

اسلام میں عورتوں کے حجاب کے حوالے سے کیا تصور پایا جاتا ہے؟ کیا یہ ضروری ہے کہ وہ نامحرم افراد سے اپنے چہرے، ہاتھوں اور پاؤں کو چھپائیں اور ان کے ساتھ درشتی سے بات کیا کریں؟

پڑھیے۔۔۔

عورت کا سر ڈھانکنا

کیا عورت کے لیے ہر وقت اپنا سر ڈھانکنا لازم ہے؟

پڑھیے۔۔۔

اسلام میں پردے کا حکم

پردے کے بارے میں صحیح نقطۂ نظر کیا ہے؟

پڑھیے۔۔۔

سر کی اوڑھنی

میں عورتوں کے پردہ سے متعلق سوال کرنا چاہتا ہوں۔ غامدی صاحب کا کہنا ہے کہ عورت کا سر پر اوڑھنی لینا ضروری نہیں ہے۔ سر کی اوڑھنی سے سینہ ڈھانپ لینا ضروری ہے۔ تو میں نہیں سمجھ پا رہا کہ اگر سر کی اوڑھنی سے سینہ ڈھانپنے کا حکم ہے تو پھر سر کو اوڑھنے کا حکم ختم تو نہیں ہو جاتا وہ بھی برقرار رہنا چاہیے۔ برائے مہربانی وضاحت کے ساتھ جواب ارسال کریں۔

پڑھیے۔۔۔

پردے کے احکام

عورت کے لیے پردے کا اصل حکم کیا ہے؟ کیا سر ڈھانپنا ضروری ہے؟ جسم کس حد تک ملبوس ہونا چاہیے؟ کیا ایک بڑی چادر یا برقع لینا ضروری ہے؟

پڑھیے۔۔۔

معراج، عورت كی امامت اور پردہ

میں 'youtube' پر غامدی صاحب کو سن رہا تھا۔ ايك سوال كے جواب ميں انھوں نے كہا کہ معراج كا واقعہ اصل ميں خواب تھا۔ یہ اصل میں جسمانی سفر نہيں تھا ۔ ميرے علم ميں قرآن مجيد میں ،خاص طور پر ،سورہ نجم میں فرمایا گیا ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم وہاں گئے تھے اور انھوں نے سب کچھ دیکھا۔ وضاحت فرمائيے۔

میرا دوسرا سوال عورتوں کی امامت کے بارے میں ہے۔ غامدی صاحب کے نزدیک عورتیں مرد مقتديوں كی امام ہو سکتی ہیں۔ کیا آپ یہ نہیں سوچتے کہ جب تمام مرد اور عورتیں اکٹھے نماز پڑھ رہے ہوں ان ميں نامحرم مرد اور عورتیں بھی ہوں گے۔ ان کی نظر ایک دوسرے پر پڑے گی تو اس طرح ان کی نماز خراب ہو گی۔ اس طرح عیسائیت اور اسلام میں کیا فرق رہ گیا؟ میرا خیال یہ ہے کہ مرد اور عورتيں صرف اس صورت ميں ساتھ نماز پڑھ سكتی ہیں جب عورتيں پردے ميں ہوں ۔ ایک حدیث میں بھی یہ کہا گیا ہے کہ اگر تم دوسرے لوگوں (غير مسلموں) کی روایات پر عمل کرو گے تو ان جیسے بن جاؤ گے۔ ان کے ہاں عورتوں اور مردوں کو اکٹھے نماز پڑھنے کی اجازت ہے ۔ اسلام عورت کو اکیلے میں نماز پڑھنے کی تاکید کرتا ہے اور یہی ان کے لیے بہتر بھی ہے ۔ جمعہ کی نماز البتہ عورتوں کو بھی مسجد میں پڑھنی چاہیے لیکن مردوں سے علیحدہ-

ميرا تیسرا سوال حجاب کے بارے میں ہے۔ کیا آپ كے نزديك سر کو ڈھانپنا عورت پر فرض نہيں ہے؟ اگر انھوں نے زیورات نہ بھی پہنے ہوں پھر بھی ان کے لیے بہتر ہے کہ وہ اپنا سر ڈھانپ کر رکھیں۔ سورہ احزاب میں دئے گئے پردے کے احکام كے بارے ميں غامدی صاحب کا کہنا ہے کہ یہ صرف مدینہ کی عورتوں کے لیے ہیں کہ وہ غیر محرم مردوں سے پردہ کریں۔ کیا آپ كے نزديك قرآن کے اندر موجود ہدایات ہمیشہ کے لیے نہيں ہیں؟ میرا خیال ہے کہ اگر عورت کسی کھلی جگہ پہ ہو ں تو ظاہر ہے کہ وہاں ہر قسم کے مرد ہوتے ہیں جن میں جاہل اور گنوار بھی ہوسكتے ہیں۔ عورتوں پر فرض ہے کہ وقت اور ماحول کی مناسبت سے اپنے سر دوپٹہ وغيرہ سے ڈھانپ لیا کریں۔ یہ تین نقاط ہیں جن کے بارے میں مجھے غامدی صاحب سے اتفاق نہیں ہے۔ برائے مہربانی آپ میرے ان سوالات کے جواب ارسال کریں تا کہ عورتوں کی عزت و عصمت کے تحفظ کے لیے ان کی مدد کر سکوں۔

پڑھیے۔۔۔

پردے کے احکام کے نفاذ کا طریقہ

اسلام میں خواتین کے لیے پردے کے احکام بہت سخت ہیں۔ آپ کیا سمجھتے ہیں کہ ہم دنیا کی تمام مسلم خواتین پر ان احکام کا نفاذ کس طرح کر سکتے ہیں؟

پڑھیے۔۔۔

دینی احکام کا بالجبر نفاذ

ہم جدہ میں رہتے ہیں اور مکہ جاتے رہتے ہیں عمرہ یا طواف کرنے ۔میری بیوی چہرے کا پردہ نہیں کرتی، کیا وہا ں مقرر عملے کے کسی شخص کو یہ حق حاصل ہے کہ وہ میری بیوی کو با اصرار چہرہ چھپانے کا حکم دے ؟

پڑھیے۔۔۔