• TAGS:

با وضو شخص کا دوبارہ وضو کرنا اور اس کی دینی حیثیت

میں ایک سوال عرض کرنا چاہتا ہوں کہ اگر انسان کا وضو قائم ہو اور وہ نماز کے لیے دوبارہ وضو کر لے تو کیا یہ بدعت ہو گی؟ برائے مہربانی تاریخ کا کوئی حوالہ دیں؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

نماز سے متعلق چند سوالات

میں آج کل شدید الجھن سے دو چار ہوں اور اس الجھن کے بیج مجھ میں پرویزی حضرات نے بوئے ہیں۔ ویسے تو میں ان کی احادیث پر بے جا تنقید سے بے زار ہوں اور پرویز صاحب کی قرآن فہمی بھی میرے لیے ادنیٰ درجے میں بھی قابل تبصرہ نہیں کہ میں اس کو جہالت سمجھوں۔ لیکن ان کی نماز پر تنقید نے یقینا کہیں نہ کہیں کچھ گڑ بڑ کر دی ہے اور اس کے باعث میں نے آج کل نماز ترک کر رکھی ہے جس کا مجھے ملال رہتا ہے۔ ان حضرت کی تنقید کے علاوہ بھی میرے ذہن میں کچھ سوال ہیں:

۱۔ کیا نماز اسی طرح سختی سے پانچ وقت کی ادا کرنا فرض ہے جیسا کہ بیان کیا جاتا ہے؟

۲۔ کیا نماز کا ترک کر دینا کافر ہو جانے کے برابر ہے؟

۳۔ اسلام اگر دین فطرت ہے تو نماز کی ہر حال میں پابندی اور کوتاہی کے نتیجے میں شدید ترین گناہ ہے، ایک ایسی بات ہے جو کہ ہر خاص و عام مسلمان پر بیک وقت لا گو ہو، کچھ سمجھ میں نہیں آتی۔

۴۔ میں جو آج کل نماز سے بالکل غافل ہوں تو میرا کیا مقام ہو سکتا ہے اﷲ کے نزدیک؟

۵۔ پانچ وقتی نمازی کو انتہائی بے ایمان بے دیکھا ہے اور بے نمازی کو بے حد ایماندار بھی، ایسا کیوں ہوتا ہے؟

۶۔کیا نماز کے بغیر جنت کا حصول ممکن ہے؟

الغرض اس طرح کے بے شمار وسوسے میرے دامن گیر ہیں۔ برائے مہربانی اس ضمن میں میری اصلاح فرمائیں۔

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

نماز کے شروع میں دعائے ابراہیمی

میں نے اپنے ایک سوال میں جناب امین احسن اصلاحی صاحب کی کتاب تزکیہ نفس کے مطابق نماز کے شروع میں دعائے ابراہیمی پڑھنے کا ذکر کیا تھا۔ ریحان صاحب نے کہا ہے کہ یہ تکبیر کے بعد نبی صلی اللہ علیہ وسلم پڑھا کرتے تھے۔ جب کہ تزکیہ نفس کا مطالعہ کی جائے تو اس کے مطابق یہ دعا تکبیر سے پڑھنی چاہیے۔ برائے مہربانی وضاحت فرمائیں۔ مزید یہ کہ غامدی صاحب کی میزان کا مطالعہ کرتے ہوئے میں نے نوٹ کیا کہ غامدی صاحب کے مطابق بھی اس دعا کو تکبیر کے بعد پڑھنا چاہیے۔ برائے مہربانی اس مسئلے کو واضح کریں اور رہنمائی فرمائیں۔

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

نماز کی ہیئت

تزکیہ نفس کے صفحہ ٢٤٤پر "نماز کی ہیئت " کے عنوان کے تحت اصلاحی صاحب نے نمازمیں ہاتھ کے پھیلانے کا جو ذکر کیا ہے اس کو واضح کریں۔ کہیں اس سے نماز کے بعد ہاتھ اٹھانا تو مراد نہیں جو نبیؐ نے فرض نماز کے بعد کبھی نہیں اٹھایا ہے۔

تزکیہ نفس کےصفحہ245 پرنمازکی دعائیں کےعنوان کے تحت لکھا ہے کہ بندہ کونمازمیں داخل ہوتےوقت دعا ابراہیمی پڑھنی چاہیے:

اني إِنِّي وَجَّهْتُ وَجْهِيَ لِلَّذِي فَطَرَ السَّمَاوَاتِ وَالأَرْضَ حَنِيفًا وَمَا أَنَْا مِنَ الْمُشْرِكِينَ (الإنعام 79)

اسکا ماخذ کیا ہے؟ اگریہ عمل نبی نے کبھی نہیں کیا تو پھر کیا یہ بدعت نہیں ہے ؟ کیونکہ ہم بطور دین نماز کے شروع،درمیان اور آخر میں کوئی اضافہ نہیں کر سکتے۔ قرآن اور حدیث کی روشنی میں وضاحت فرما دیں۔

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

عورت اور مرد كا سترڈھانپنا

جیسا کہ بیان کیا جاتا ہے کہ مرد کا ستر ناف سے گھٹنوں تک ہے اور یہ نماز کی شرائط میں سے بھی ہے، اس کی کیا حقیقت ہے اور کن دلائل کی بنیاد پر ایسا کہا جاتا ہے ؟ کیا یہ اللہ اور رسول نے متعین کیا ہے یا فقہا کی اپنی رائے ہے ؟ آپ کی اس بارے میں کیا رائے ہے ؟

عورت کے ستر کے بارے میں ایک حدیث پیش کی جاتی ہے جو حضرت اسما بنت ابو بکر سے مروی ہے - میرے علم کے مطابق کم و بیش سب ہی علما شاید اسی حدیث کی رو سے چہرہ ، ہاتھ اور پاؤں کے سوا تمام جسم کو ستر قرار دیتے ہیں - کیا علمائے امّت میں سے کسی اور نے بھی اس سے مختلف رائے کا اظہار کیا ہے ؟ کیا اس حدیث میں کوئی ضعف ہے یا اس کو سمجھنے میں غلطی ہوئی ہے ؟

جیسا کہ میں سمجھا ہوں ، آپ لوگوں کا کہنا ہے کہ شریعت نے لباس کےحدود و خدوخال متعین نہیں کیے بلکہ شرم و حیا اور ایک مہذب لباس کی تلقین کی ہے ، جب کہ زیب و زینت نہ کی ہوئی ہو- مجھ پر اس کا اطلاقی پہلو کچھ واضح نہیں ہے - گویا ہر ایک کو اپنے لیے مہذب لباس کا فیصلہ خود کرنا ہے ، تو اس فیصلے میں معاشرے کے معروف معیار کا کتنا دخل ہے یا یہ محض اپنے فطری احساس پر مبنی ہے - شرمگاہوں کو اچھی طرح ڈھانپنے کے بعد اگر معاشرے کے معروف کی پیروی کی جا تو کیا دین کا منشا پورا ہو جاتا ہے ؟ شرمگاہوں کی حفاظت تو ایک فطری امر بھی ہے ، لیکن اس سے اوپر اوپر ہر معاشرے میں مہذب لباس کا تصور مختلف ہوتا ہے - ایک مغربی معاشرے میں بازو اور پنڈلی ( اور شاید کندھے بھی ) کھلے ہونے کے باوجود لباس مہذب ہی کہلاتا ہے اور ذرا بھی عجیب اور معیوب نہیں سمجھا جاتا - تو ایک مغربی عورت کو کیسے کہا جا کہ مہذب لباس وہی ہے جو پاکستان میں مہذب کہلاتا ہے - مزید یہ کہ دین میں لباس کے حدود کو متعین نہ کرنے میں کیا حکمت ہے ؟ مثلا کیا یہی کہ مختلف معاشروں میں ان کے حالات کے اعتبار سے رعایت کی جا اور لوگوں کے لیے تنگی نہ پیدا ہو ؟ معلوم نہیں میں اپنا سوال واضح کر سکا ہوں یا نہیں-

براہ کرم میری کم علمی پر در گزر کریں اور تفصیلی وضاحت فرمایں - جزاک اللہ

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

مشرک کے پیچھے نماز

میرا سوال یہ ہے کہ کیا موجودہ دور میں شرک کرنے والے کے پیچھے نماز پڑھی جا سکتی ہے؟ اگر پڑھی جا سکتی ہے تو قرآن کی ان آیات کا مفہوم کیا ہے جن میں ۱۸ انبیاء کا ذکر کرتے ہوئے اللہ تعالٰی نے فرمایا ہے کہ اگر ان انبیاء سے شرک سرزد ہو جاتا تو ان کے تمام اعمال ضائع ہو جاتے؟ ایک اور جگہ محمدﷺ کا خصوصاً ذکر کرتے ہوئے ان سے خطاب کیا گیا ہے کہ اگر تم نے اللہ کے ساتھ شریک ٹھہرایا تو تمھارے تمام اعمال ضائع کر دیے جائیں گے۔ اعمال میں سب سے پہلے نماز آتی ہے تو اگر کسی ایسے امام کے پیچھے نماز پڑھی جائے تو کیا مقتدی کی نماز بھی ضائع ہو جائے گی جب کہ مقتدی کو معلوم ہو کہ امام کے عقیدے میں شرک واضح ہے؟ وہ قبر پرست ہو؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

فجر کی سنتوں کے بعد صلوٰۃ المسجد ادا کرنا

گھر میں فجر کی سنتیں ادا کرنے کے اگر ہم مسجد جائیں تو کیا وہاں فرض سے پہلے دو رکعت صلوٰۃ المسجد پڑ ھ سکتے ہیں؟ کیونکہ کہا جاتا ہے کہ فجر کی سنتوں اور فرضوں کے درمیان کوئی نماز نہیں پڑ ھی جا سکتی؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

نماز کی جگہ فلاحی کام کرنا

ہم نماز پڑ ھتے ہیں ، اس میں کم و بیش دو گھنٹے روزانہ لگتے ہیں ۔ کیا یہی وقت ہم دیگر فلاحی کاموں میں استعمال نہیں کر سکتے؟ دفتروں میں لوگ کام سے بچنے کے لیے نماز دیر سے پڑ ھتے ہیں ۔ جبکہ اہل مغرب ہمہ وقت کام کر کے ترقی کر رہے ہیں۔

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

اذان و اقامت سے پہلے درود اور نماز کے بعد ذکر

میں اندرونِ سندھ میں رہتا ہوں ، جہاں لوگ اسلام کے بارے میں بہت کم جانتے اور بہت کم واقفیت رکھتے ہیں۔ آج سے تقریباً 20 ، 30 سال پہلے میرے والد نے ہمارے پڑ وس میں ایک مسجد بنائی تھی۔ہم سالوں سے وہاں نماز پڑ ھ رہے تھے ، آج تک کسی نے یہ اعتراض نہیں کیا کہ جس طریقے سے نماز کے معاملات انجام دیے جاتے ہیں وہ ٹھیک نہیں ہے ۔لیکن چند سال پہلے ہماری مسجد میں کچھ نئے لوگ آئے اور اُنہوں نے ہمیں نماز اور دیگر معاملات کی ادائیگی کے کچھ نئے طریقے سکھائے ، جس میں اذان و اقامت سے پہلے درود و سلام پڑ ھنا اور فرض نمازوں کے بعد بآوازِ بلند ذکر کرنا وغیرہ شامل ہے۔ اِن کا کہنا یہ تھا کہ یہ وہ اصل طریقہ ہے جس کے مطابق اللہ کے رسول کے دور میں اذان و اقامت کہی جاتی، نمازیں پڑ ھی جاتیں اور فرض نمازوں کے بعد ذکر کیا جاتا تھا۔ اِن باتوں کی وجہ سے مسجد میں آنے والے لوگوں کے درمیان بہت سے اختلافات پیدا ہوگئے ہیں ، نمازیوں کی تعداد میں بھی کمی واقع ہوئی ہے اور مسلسل مزید کمی ہوتی جا رہی ہے ۔سوال یہ ہے کہ اِن معاملات میں صحیح اور مستند طریقہ کیا ہے اور کیا ہم یہ سارے نئے کام کر سکتے ہیں جو ہمیں سکھائے گئے ہیں؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

جماعت میں مقتدی کا تلاوت کرنا

جماعت میں شامل مقتدی تلاوت کیوں نہیں کرتا؟ کیا اس صورت میں ہم ان روحانی فوائد سے محروم نہیں رہتے ، جو ہم خود تلاوت کرنے کی صورت میں محسوس کرتے ہیں؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

نمازِ تہجد کا وقت

کیا نمازِ تہجد کی ادائیگی کے لیے سونا شرط ہے یا ہم بغیر سوئے عشا کے بعد کسی بھی وقت اسے ادا کر سکتے ہیں اور تہجد کی نماز اور صلوٰۃ اللیل میں کیا فرق ہے ؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

تحيّۃ المسجد اور دیگر نوافل

سعودیہ میں لوگ ہر دفعہ مسجد میں داخل ہونے پر دو رکعت تحيّۃ المسجد کا بہت اہتمام کرتے ہیں ، جبکہ ہمارے ہاں ایسا کوئی اہتمام نہیں پایا جاتا ، اس کی کیا وجہ ہے؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

ایامِ حیض میں نماز كي ممانعت

کیا ایامِ حیض میں خواتین کے لیے نماز پڑ ھنا ممنوع ہے؟ اگر ہے تو پھر قرآن میں اس ممانعت کا ذکر موجود کیوں نہیں ہے؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

نمازِ تراویح اور خواتین

کیا عورتوں کو بھی تراویح کی نماز پڑ ھنی چاہیے ؟اگر پڑ ھنی چاہیے تو وہ کتنی رکعتیں پڑ ھیں؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

تشہد میں درود و سلام کیوں؟

نماز میں تشہد میں درود و سلام پڑ ھا جاتا ہے ۔ نماز تو اول تا آخر اللہ تعالیٰ کی عبادت ہے اور حالتِ عبادت میں تو صرف اللہ تعالیٰ کے لیے عجز و انکسار زیبا ہے تو پھر نماز میں درود و سلام کیوں پڑ ھا جاتا ہے؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

عورتوں کی نماز کا طریقہ

عورتوں کو مردوں ہی کی طرح نماز پڑ ھنی چاہیے یا دونوں کے لیے الگ الگ طریقہ ہے؟ اس حدیث کا مطلب بھی بتائیں جس میں حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہے کہ جس طرح مجھے نماز پڑ ھتے دیکھو اسی طرح نماز پڑھو؟

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

اقامتِ صلوٰۃ کا مفہوم

اقامتِ صلوٰۃ کا کیا مفہوم ہے؟ سورۂ حج (22)کی آیت 41 کے حوالے سے کیا آپ نہیں سمجھتے کہ اس کا مطلب محض انفرادی طور پر اپنی اپنی نمازیں پڑ ھ لینا ہی نہیں ، بلکہ اس سے کچھ زیادہ ہے اور وہ یہ کہ ایک پورا ’الوہی نظام‘ برپا کیا جائے ۔ اکیلے اپنی اپنی نمازیں ادا کر لینا اس آیت میں مراد ’مطلوبہ الوہی نظام‘ کا ایک چھوٹا سا حصہ تو ہو سکتا ہے لیکن اقامتِ صلوٰۃ کا مفہوم یقینا ایک ایسا نظام ہے جو سارے معاشرے کو محیط ہو۔ اس پر ذرا روشنی ڈال دیجیے۔

پڑھیے۔۔۔
  • TAGS:

نمازوں کو جمع کرنا

کیا نمازوں کو جمع کیا جا سکتا ہے ؟اگر ہاں تو کن حالات میں اور کیا یہ کام عام طور پر کیا جا سکتا ہے ؟اگر ہاں تو کن حالات میں ؟

پڑھیے۔۔۔