کافر کی تعریف

کافر کی تعریف کیا ہے؟

پڑھیے۔۔۔

کسی کو کافر قرار دینا

کیا اسلامی شریعت کے مطابق ہم کسی کو کافر قرار دے سکتے ہیں؟

پڑھیے۔۔۔

کافر اور غیر مسلم میں فرق

کافر اور غیر مسلم میں کیا فرق ہے؟

پڑھیے۔۔۔

کافر اور غیر مسلم کا اطلاق

کافر اور غیر مسلم کا اطلاق کس شخص پر ہوتا ہے؟

پڑھیے۔۔۔

کافر اور غیر مسلم میں فرق

عام طور پر ہر غیر مسلم کو کافر کہا جاتا ہے، کیا یہ صحیح ہے کہ ہر غیر مسلم کافر ہوتا ہے یا ان دونوں میں فرق ہے؟

پڑھیے۔۔۔

سیدنا نوح علیہ السلام كی كافر بیٹے كے لیے دعا

آپ نے یہ سوال كیا ہے كہ حكم امتناعی كے باوجود نوح علیہ السلام بیٹے كی نجات كی دعا كیوں كی اور كشتی میں سوار ہونے كی دعوت كیوں دی؟

پڑھیے۔۔۔

شخصیات پر تبصرہ

جیسا کہ آ پ کو معلوم ہے کہ طاہر القادری صاحب آجکل پاکستان آئے ہوئے ہیں۔ جو کچھ وہ کر رہے ہیں یہ بھی آپ جانتے ہیں۔ میرا سوال ہے کہ کیا طاہر القادری قرآن پاک اور حدیث کے مطابق مسلمان ہیں؟ کیا قادری صاحب پر یقین کیا جا سکتا ہے؟ کیا ہم بچوں کو اسلامی تعلیمات کے لئے منہاج القرآن سکول بھیج جا سکتے ہیں؟

پڑھیے۔۔۔

اتمام حجت سے متعلق ایک سوال

میں نے غامدی صاحب کی کتاب میزان کا مطالعہ کیا۔ اس میں کچھ باتیں میری سمجھ میں نہیں آئیں اس لیے آپ کی رہنمائی چاہتا ہوں۔ ۱۔ غامدی صاحب کا موقف ہے کہ اتمام حجت کے بعد ہی ہم کسی کی تکفیر کر سکتے ہیں، تو پھر قرآن میں کفار، کافرون، وغیرہ کے الفاظ کیوں ہیں جب کہ اس وقت نبی بھی ان میں موجود تھا اور اتمام حجت کا مرحلہ بھی نہیں آیا تھا۔ اسی طرح مشرک بھی کہا گیا ہے، برائے مہربانی تفصیلی وضاحت فرمائیں۔ ۲۔ کیا ہم ہندؤوں اور یہود و انصار کے مرنے پر ان کی مغفرت کی دعا کر سکتے ہیں؟ ۳۔ کیا ہم ہندؤوں کو اور اہل کتاب کی اپنے بیٹوں اور بیٹیوں کے ساتھ شادی کروا سکتے ہیں، یعنی ایک مومن لڑکی کو کسی ہندو کے نکاح میں دیا جا سکتا ہے؟ تفصیلی وضاحت مطلوب ہے۔

پڑھیے۔۔۔

مشرک کی تعریف

ہم نے ایک سوال مشرک کے پیچھے نماز پڑھنے کے متعلق بھیجا تھا جس کا جواب ہم نے پڑھا، لیکن اس جواب سے ہمیں صحیح رہنمائی حاصل نہیں ہوئی کیوں کہ جناب ریحان احمد یوسفی صاحب نے شرک کے متعلق قرآنی آیات کو اہل مکہ رسول کے مخاطبین کے ساتھ خاص قرار دیا ہے۔ مجھے اس بات کا اعتراف ہے کہ موجودہ دور کے شرک کرنے والے لوگ مشرک نہیں کہلاتے مگر نماز کے سلسلے میں آپ کا بیان کردہ موقف شک کی بنیاد پر مبنی ہے اور عبادت کے لیے لازمی ہے کہ یہ شک سے پاک ہو۔ مزید یہ کہ شرک کے متعلق آیات میں کوئی مخصوصیات اور استثنا نہیں۔ اگر آپ کا موقف اس کے منافی ہے تو ان آیات پر عمل کرنے کی صورت کیا ہو گی؟ کیوں کہ آپ کا کہنا یہ ہے کہ ان آیات کے مخاطب وہ لوگ تھے جنھوں نے شرک کی حقیقت واضح ہونے کے بعد بھی شرک کو اپنائے رکھا۔ برائے مہربانی اس بات کی وضاحت بھی کریں کہ شرک کیا ہے؟

پڑھیے۔۔۔