اسلام کا زبان سے اقرار اور عمل سے نفی کرنا

زبان سے کلمہ اسلام کا اقرار اور عمل سے اس کی نفی کرنے والے کو کیا کہیں گے؟

پڑھیے۔۔۔

کفر اور شرک

میرا سوال المورد ویب سائٹ پر پوسٹ کیے گئے ایک جواب سے متعلق ہے جس کا لنک یہ ہے:

http://www.al-mawrid.org/pages/questions_english_detail.php?qid=900&cid=51

اس جواب میں کہا گیا ہے کہ کفر ایک رویہ ہے جو لوگوں کے کسی بھی گروہ پر اثر انداز ہو سکتا ہے۔ اور ایک شخص، اگرچہ وہ کافر ہو یا نہ ہو مشرک ہو سکتا ہے۔ سورہ بیّنہ (۹۸) کی پہلی آیت کے مطابق، "اہل کتاب اور مشرکین میں سے جنہوں نے (قرآن کا) انکار کیا وہ اپنی ہٹ سے باز آنے والے نہیں ہیں، یہاں تک کہ ان کے پاس کھلی ہوئی نشانیاں آ جائیں۔" اسی سورہ کی آیت ۶ میں کہا گیا ہے کہ "بے شک اہل کتاب اور مشرکین میں سے جنہوں نے کفر کیا وہ دوزخ کی آگ میں پڑیں گے، اس میں ہمیشہ رہنے کے لیے، یہی لوگ بدترین خلائق ہیں۔" جب میں ان آیات کا بغور مطالعہ کرتا ہوں تو میں یہ کہہ سکتا ہوں کہ وہ لوگ جنہوں نے قرآن کو جھٹلایا اور اسلام قبول کیا اصل میں انہوں نے قرآن کو جھٹلایا نہیں بلکہ اسے مانا۔ تو اس آیت میں یہ کیوں کہا گیا ہے کہ جنہوں نے قرآن کو جھٹلایا نہیں وہ پھر بھی مشرکین اور اور اہل کتاب ہیں لیکن کافر نہیں ہیں؟َ برائے مہربانی وضاحت فرمائیے۔

میرا دوسرا سوال یہ ہے کہ قرآن میں اللہ تعالیٰ کا فرمان ہے اگر کسی مسلمان نے کسی دوسرے مسلمان کو قتل کیا وہ ہمیشہ جہنم میں رہے گا۔ تو کیا اگر وہ کسی غیر مسلم کو قتل کرے پھر بھی وہ ہمیشہ کے لیے جہنم میں رہے گا؟

نمبر ۳ یہ کہ قرآن و حدیث کے حوالہ کےساتھ یہ بھی بتائیں کہ وہ کون سا گناہ ہے جس کی پاداش میں انسان ہمیشہ کے لیے جہنم میں جائیگا؟

اور نمبر ۴ یہ کہ کیا گناہ چھوٹا ہو یا بڑا سب کی سزا ایک جیسی ہو گی؟

برائے مہربانی تفصیلی وضاحت فرمائیں۔

پڑھیے۔۔۔

حضرت ابو طالب سے متعلق ایک فتویٰ

میں آپ سے ایک سوال پوچھنا چاہتا ہو جو کہ مفتی احمد رضا خان قادری بریلوی کا ایک مشہور رسالہ سے متعلق ہے جس کا ویب لنک پیش خدمت ہے:

http://www.razanw.org/modules/alahazratbooks/item.php?itemid=89&page=630

مفتی احمد رضا خان بریلوی نے یہ رسالہ حضرت ابو طالبؓ کے نعوذباللہ کافر ہونے کے بارے میں بطور دلیل لکھا ہے۔ انہوں نے لکھا ہے کہ نعوذ باللہ حضرت ابو طالب ایک کافر تھے اور پکے جہنمی ہیں۔

میں آپ سے یہ گزارش کرنا چاہوں گا کہ آپ اس رسالہ کو ضرور پڑھیں اور احمد رضا بریلوی کے اس فتویٰ کو رد کرنے میں ہماری رہنمائی فرمائیں۔اور اس کی تصدیق و تنقید کے حوالے سے اس پر روشنی ڈالیں۔

ذیل میں میں چند کتابوں کا حوالہ دیتا ہوں جسے پڑھ کر آپ ابو طالب کے بارے میں بیان کی گئی فحش گوئیوں کا صحیح اندازہ کر سکتے ہیں۔

١۔ شرح المطالب فی مبحث ابی طالب

٢۔ فتویٰ رضویہ جدید، جلد ٢٩، صفحہ ٦٥٥ تا ٧٤٩

پڑھیے۔۔۔