Search

عورتوں کی نماز کا طریقہ

سوال:

جواب:

دین میں مرد و زن کے طریقۂ نماز میں کسی فرق کا ذکر نہیں ملتا۔ یہی بات اس روایت سے ثابت ہے جو آپ نے نقل کی ہے کہ جس طرح مجھے نماز ادا کرتے دیکھو ویسے ہی نماز ادا کرو۔ تاہم ہمارے ہاں ایک نقطۂ نظر کے زیرِ اثر خواتین نماز کے بعض اراکین کی ادائیگی اس طرح کرتی ہیں کہ ان کا جسم اور اعضا ذرا سمٹے ہوئے رہیں۔ ہمارے نزدیک اس میں کوئی حرج نہیں۔ اس لیے کہ اس سے نماز کے اراکین کی اصل ہیئت متاثر نہیں ہوتی۔ مثال کے طور پر سجدہ میں ان کی پیشانی ، ہاتھ، پاؤں ، گھٹنے زمین پر اور دھڑ پوری طرح جھکا ہوا ہوتا ہے ، اور ان کےجسم میں ایک نوعیت کا سمٹاؤ آ جاتا ہے ۔

Rehan Ahmed Yusufi