Search

اذان يا جماعت سے پہلے نماز پڑ ھنا

سوال:

جواب:

آپ کے دونوں سوالات کے جوابات درج ذیل ہیں

۱)
مسجدیں اس لیے بنائی جاتی ہیں کہ مسلمان وہاں اکھٹے ہوکر فرض نماز باجماعت ادا کرسکیں ۔اس مقصد کے لیے ہر مسجد میں نماز باجماعت کا ایک خاص وقت متعین کیا جاتا ہے ۔ عام حالات میں اس اجتماعی نماز سے قبل فرض نماز تنہا نہیں پڑ ھنا چاہیے ۔ تاہم آپ کو ایک عذر در پیش ہے ، اس لیے آپ مسجد میں جماعت سے پہلے نماز ادا کر کے اپنی کلاس لینے جا سکتے ہیں ۔

۲)
نماز کا وقت اس وقت شروع نہیں ہوتا جب اذان دی جاتی ہے ، بلکہ اس سے پہلے ہی شروع ہو چکا ہوتا ہے ۔اذان کا مقصد جماعت کے لیے لوگوں کو اکھٹا کرنا ہوتا ہے اور یہ اذان عام طور پر نماز کا وقت ہوجانے کے کچھ دیر بعد دی جاتی ہے ۔ آپ چاہیں تواذان سے قبل نماز ادا کر سکتے ہیں ، لیکن اس سے پہلے یہ اطمینان کر لیں کے اس خاص نماز کا وقت شروع ہو چکا ہے ۔ ہر مسجد میں وہ نقشے موجود ہوتے ہیں جن کی مدد سے آپ پورے سال میں وہ متعین گھنٹہ اور منٹ معلوم کرسکتے ہیں جب کسی نماز کا وقت شروع ہوجاتا ہے ۔ اس وقت کے بعد آپ اپنی نماز ادا کرسکتے ہیں ۔

Rehan Ahmed Yusufi