معراج شریف2

سوال:

معراج شریف کے بارے میں آپ کی رائے کیا ہے۔


جواب:

آپ کا سوال بہت مجمل ہے۔ اس سے اندازہ نہیں لگایا جا سکتا کہ معراج کے حوالے سے آپ کی الجھن کیا ہے۔ ہماری ویب سائٹس پر اس کے بارے میں سوالوں کے جوابات موجود ہیں آپ ان کا مطالعہ کرکے اگر اپنی اصل الجھن لکھتے تو آپ کو زیادہ بہتر جواب ملتا۔

عام طور پر معراج کے جسمانی یا روحانی ہونے کی بحث ہوتی ہے۔ قرآن مجید نے سورہ بنی اسرائیل میں جس کے آغاز میں مسجد اقصی کی طرف لے جانے کا ذکر ہوا ہے، اسے رویا قرار دیا ہے۔ اس کا مطلب یہی بنتا ہے کہ یہ سفر جسمانی نہیں تھا۔ لیکن اس سے حقیقت واقعہ میں کوئی تبدیلی نہیں ہوتی۔ یہ ایک معجزانہ سفر ہی تھا اس لیے کہ اس میں آپ کو جو مشاہدات کرائے گئے وہ عالم غیب کے حقائق تھے۔ جن سے آپ کے لیے ہی پردہ ہٹایا گیا تھا۔

یہاں یہ بات واضح رہے کہ اگر قرآن نے اسے رویا نہ کہا ہوتا تو اس کو جسمانی ماننے میں کوئی عقلی استحالہ نہیں ہے۔

answered by: Talib Mohsin

About the Author

Talib Mohsin


Mr Talib Mohsin was born in 1959 in the district Pakpattan of Punjab. He received elementary education in his native town. Later on he moved to Lahore and passed his matriculation from the Board of Intermediate and Secondary Education Lahore. He joined F.C College Lahore and graduated in 1981. He has his MA in Islamic Studies from the University of Punjab. He joined Mr Ghamidi to learn religious disciplines during early years of his educational career. He is one of the senior students of Mr Ghamidi form whom he learnt Arabic Grammar and major religious disciplines.

He was a major contributor in the establishment of the institutes and other organizations by Mr Ghamidi including Anṣār al-Muslimūn and Al-Mawrid. He worked in Ishrāq, a monthly Urdu journal, from the beginning. He worked as assistant editor of the journal for many years. He has been engaged in research and writing under the auspice of Al-Mawrid and has also been teaching in the Institute.

Answered by this author