ايک امام كی پيروی

سوال:

١۔ کیا اسلام میں کسی ایک امام (امام احمد بن حنبل بخاری) کا پیرو کار ہونا ضروری ہے؟ میرے والد صاحب کا کہنا ہے کہ کسی ایک فرقے یا امام کو ماننا غلط ہے۔ ہم صرف مسلمان ہیں۔ صحیح بات جہاں سے ملے اسے لے لو بیشک وہ قرآن سے ملے یا بائیبل سے۔ لیکن میرے سکول کے ہم جماعت کہتے ہیں کہ مسلمان ہونے کے لیے کسی امام کا پیروکار ہونا لازم ہے۔


جواب:

خدا نے ہميں دين كے معاملے ميں اپنے رسول ہى كى پيروى كا حكم ديا ہے، چنانچہ ہم اس كے رسول صلى الله عليہ وسلم سے دين ليتے اور اس پر عمل كرتے ہيں.البتہ دين پر عمل كرتے ہوئے بعض موقعوں پر اس كى شرح وضاحت كى ضرورت اور بعض تفصيلى صورتوں ميں اس كے اطلاق كا مسئلہ پيش آ جاتا ہے،چنانچہ ان مواقع پر يہ ضرورى ہو جاتا ہے كہ ہم دين كے كسى بڑےعالم شخص كى طرف رجوع كريں اور زيرِ بحث مسئلے ميں اُس كى رائےمعلوم كريں تاكہ ا ُس پر عمل كيا جا سكے.ان بڑے علما ہى كو امام كہا جاتا ہے.اگر ہم خود اِس پوزيشن ميں ہوں كہ ہم ان بڑےعلما كى مختلف آرا ميں اُن كےدلائل كا جائزه لے كر ان ميں ترجيح قائم كر سكيں تو پهر ہميں كسى ايك امام كى پيروى كرنے كے بجائے ان كى آرا ميں ترجيح قائم كر كے، راجح بات پر عمل كرنا چاہيے، اور اگر ہم ايسا نہيں كر سكتے تو پهر ضرورى ہے كہ ہم كسى ايك امام، جس پر ہميں اعتماد ہو، اُس كى پيروى كريں.

answered by: Rafi Mufti

About the Author

Muhammad Rafi Mufti


Mr Muhammad Rafi Mufti was born on December 9, 1953 in district Wazirabad Pakistan. He received formal education up to BSc and joined Glaxo Laboratories Limited. He came into contact with Mr Javed Ahmad Ghamidi in 1976 and started occasionally attending his lectures. This general and informal learning and teaching continued for some time until he started regularly learning religious disciplines from Mr Ghamidi in 1984. He resigned from his job when it proved a hindrance in his studies. He received training in Hadith from the scholars of Ahl-i Hadith School of Thought and learned Fiqh disciplines from Hanafi scholars. He was trained in Arabic language and literature by Javed Ahmad Ghamidi. He is attached to Al-Mawrid from 1991.

Answered by this author