فاریکس ٹریڈنگ

سوال:

آن لائن فاریکس بزنس کے بارے میں آپ کی تفصیلی رائے درکار ہے- برائے مہربانی رہنمانی فرمائیں


جواب:

اس طرح کے معاملات میں ہم طالب علم صرف دین کا نقطہ نظرہی بیان کرسکتے ہیں۔ باقی دنیا میں کیا کچھ ہورہا ہے ، اس کی تفصیل آپ اس چیز کے ماہر سے دریافت فرماکر دیکھیے کہ آیا ان اصولوں کی روشنی میں یہ کام غلط ہے یا درست۔

دین معاشی معاملات میں جو بنیادی اصول دیتا ہے وہ قران مجید کے الفاظ میں یہ ہے۔

’’تم ایک دوسرے کے مال باطل طریقے پر مت کھاؤ‘‘،(النسا29:4)

اس آیت کے تحت استاذ گرامی لکھتے ہیں:

’اِس آیت میں دوسروں کا مال اُن طریقوں سے کھانے کی ممانعت کی گئی ہے جو عدل و انصاف، معروف ،دیانت اور سچائی کے خلاف ہیں۔ اسلام میں معاشی معاملات سے متعلق تمام حرمتوں کی بنیاد اﷲ تعالیٰ کا یہی حکم ہے ۔رشوت، چوری، غصب، غلط بیانی، تعاون علی الاثم ،غبن، خیانت اور لقطہ کی مناسب تشہیر سے گریز کے ذریعے سے دوسروں کا مال لے لینا، یہ سب اِسی کے تحت داخل ہیں ۔ اِن چیزوں پر مفصل بحث کی ضرورت نہیں ہے ،اِس لیے کہ اِن کا گناہ ہونا تمام دنیا کے معروفات اور ہر دین و شریعت میں ہمیشہ مسلم رہا ہے ۔ وہ معاملات جو دوسروں کے لیے ضرر و غرر ،یعنی نقصان یا دھوکے کا باعث بنتے ہیں،وہ بھی اِسی کی ایک فرع ہیں ۔‘‘(میزان:502)

اس کے بعد وہ ان چیزوں کا ذکر کرتے ہیں جنھیں رسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وسلم نے اس اصول کی روشنی میں اپنے زمانے میں منع کیا تھا۔ خود قران مجید نے اسی اصول کی روشنی میں سود اور جوے کو حرام قرار دیا ہے۔ اسی اصول کی روشنی میں آپ فوریکس کے کام کا جائزہ لیجیے۔ اس میں خاص کر یہ دیکیے کہ کہیں ضرر و غرر یعنی نقصان اور دکھوکہ کا عنصر تو نہیں۔ اگر آپ کا اطمینان ہوجائے تو یہ کام کرسکتے ہیں۔ اطمینان نہ ہوتو مت کیجیے۔

answered by: Rehan Ahmed Yusufi

About the Author

Rehan Ahmed Yusufi


Mr Rehan Ahamd Yusufi started his career as a teacher and an educationist after obtaining Masters Degrees in Islamic Studies and Computer Technology from the Karachi University with distinction. He started his professional career by serving as a system analyst in a commercial organization. In 1997 he joined service in Saudi Arabia and later immigrated to Canada. 

Mr Rehan Ahmad Yusufi has been attached to people of learning from the beginning of his education career. In 1991, he was introduced to Mr Javed Ahmad Ghamid, a Pakistani religious scholar. After his return from Canada in 2002, Mr Yusufi joined Al-Mawrid, a Foundation for Islamic Research and Education, founded by Mr Ghamidi. Presently Mr Yusufi is an Associate Fellow at Al-Mawrid. His job responsibilities include propagation and communication of the religion as well as religious and moral instruction of people. He is heading a training center in Karachi which offers moral training and religious education to the masses.

Mr Rehan Ahamd Yusufi has very important works and booklets to his credit. The most important of his works include Maghrib sai Mashriq Tak, Urooj-o-Zawaal ka Qanoon awr Pakistan, and Wuhi Rah Guzar. He is also the Chief Editor of the Da’wah edition of the monthly Ishraq published from Karachi. The journal is also published online on its site http://www.ishraqdawah.com

Answered by this author