گھر میں كتےاور تصوير

سوال:

میرا یہ سوال حال ہی میں دیے گئے ایک سوال کے جواب کے متعلق ہے جو کہ کتوں کو گھر میں رکھنے کی ممانعت کے بارے میں المورد ویب سائٹ پر پوسٹ کیا گیا تھا۔ اس جواب میں جس حدیث کا حوالہ دیا گیا ہے اس کے مطابق فرشتے اس گھر میں داخل نہیں ہوتے جس گھر میں کتوں کے علاوہ کسی جاندار چیز کی تصویر ہوااور ایسا شخص ہو جس پر غسل واجب ہو۔ مہربانی فرما کر گھر میں تصویر رکھنے کی ممانعت کے بارے میں بھی میری رہنمائی فرمائیے۔ اور ساتھ میں یہ وضاحت بھی کیجیے کہ اس گھر میں فرشتے کیوں نہیں آتے جس میں کوئی ایسا شخص موجود ہو جس پر غسل واجب ہو۔


جواب:

حديث ميں جن تصويروں كا ذكر ہے وه عربوں كے ديوى ديوتاؤں كى تصاوير ہوتى تهيں.چنانچہ فرشتے جو كہ انتہائى نورانى، پاكيزه اور بابركت وجود ركهتے ہيں، وه ايسى جگہوں پر نہيں جاتے جہاں يہ مشركانہ تصاوير موجود ہوں يا كوئى جنبى آدمى پايا جاتا ہو. ان كےاس گريز كى مثال بالكل ايسى ہےجيسے ايك صاف ستهرا اور پاكيزه انسان بغير كسى مجبورى كےگندگى كےڈهير كےقريب جانا پسند نہيں كرتا

answered by: Rafi Mufti

About the Author

Muhammad Rafi Mufti


Mr Muhammad Rafi Mufti was born on December 9, 1953 in district Wazirabad Pakistan. He received formal education up to BSc and joined Glaxo Laboratories Limited. He came into contact with Mr Javed Ahmad Ghamidi in 1976 and started occasionally attending his lectures. This general and informal learning and teaching continued for some time until he started regularly learning religious disciplines from Mr Ghamidi in 1984. He resigned from his job when it proved a hindrance in his studies. He received training in Hadith from the scholars of Ahl-i Hadith School of Thought and learned Fiqh disciplines from Hanafi scholars. He was trained in Arabic language and literature by Javed Ahmad Ghamidi. He is attached to Al-Mawrid from 1991.

Answered by this author