حرام ماحول میں نوکری اور حرام اشیا کی فروخت

سوال:

میرا نام محمد علی ہے اور میں امریکہ میں رہتا ہوں ۔میں ایک ایسے گیس اسٹیشن میں نوکری کرتا ہوں جہاں مجھے الکوحل ، لاٹری کے ٹکٹ اور سؤر کے گوشت کے سینڈوچز وغیرہ بھی بیچنے پڑتے ہیں۔کیا ایسے ماحول میں نوکری جائز ہو گی؟ ہم لوگ یہاں غیر قانونی طور پر رہ رہے ہیں اور ہمارے پاس کوئی امیگریشن بھی نہیں ہے لہٰذا ہمارے جیسے لوگوں کو ان جیسے گیس اسٹیشنوں کے علاوہ جو کہ پاکستانی اور انڈین لوگ چلا رہے ہیں ‘کہیں نوکری بھی نہیں مل سکتی، تو ہمیں کیا کرنا چاہیے؟


جواب:

سؤر کا گوشت، جوا اور شراب سب اسلام میں حرام ہیں ۔ ان سے متعلق کسی کاروبار میں منسلک ہونا ظاہر ہے کہ دین کی رو سے درست نہیں ہو سکتا خواہ ان کی فروخت غیر مسلموں ہی کو کی جا رہی ہو۔آپ کوئی دوسرا روزگار اختیار کر لیں تو یہ بہتر ہو گا۔اسی طرح وہ مسلمان لوگ جو یہ کاروبار چلا رہے ہیں انہیں بھی یہی نصیحت کی جانی چاہیے کہ وہ کسی ایسے کام کو اختیار کریں جن میں ایسی کوئی قباحت نہ ہو۔ آپ نے اپنے جو حالات بیان کیے ہیں وہ آپ کی حالتِ اضطرار کو واضح کر رہے ہیں اس لیے جب تک کوئی بہتر شکل سامنے نہ آئے اس وقت تک ایسی ملازمت کو دل کی کراہت کے ساتھ جاری رکھیں اور اللہ تعالیٰ سے استغفار کرتے رہیں ، وہ بہرحال بندوں کے حالات کی رعایت کرتا ہے۔ تاہم یہ بھی آپ کی ذمہ داری ہے کہ اس سے بہتر جاب کی تلاش خلوصِ دل کے ساتھ جاری رکھیں خواہ اس کے لیے آپ کو کم آمدنی کی صورت میں کچھ مالی قربانی بھی کیوں نہ دینی پڑے۔

answered by: Rehan Ahmed Yusufi

About the Author

Rehan Ahmed Yusufi


Mr Rehan Ahamd Yusufi started his career as a teacher and an educationist after obtaining Masters Degrees in Islamic Studies and Computer Technology from the Karachi University with distinction. He started his professional career by serving as a system analyst in a commercial organization. In 1997 he joined service in Saudi Arabia and later immigrated to Canada. 

Mr Rehan Ahmad Yusufi has been attached to people of learning from the beginning of his education career. In 1991, he was introduced to Mr Javed Ahmad Ghamid, a Pakistani religious scholar. After his return from Canada in 2002, Mr Yusufi joined Al-Mawrid, a Foundation for Islamic Research and Education, founded by Mr Ghamidi. Presently Mr Yusufi is an Associate Fellow at Al-Mawrid. His job responsibilities include propagation and communication of the religion as well as religious and moral instruction of people. He is heading a training center in Karachi which offers moral training and religious education to the masses.

Mr Rehan Ahamd Yusufi has very important works and booklets to his credit. The most important of his works include Maghrib sai Mashriq Tak, Urooj-o-Zawaal ka Qanoon awr Pakistan, and Wuhi Rah Guzar. He is also the Chief Editor of the Da’wah edition of the monthly Ishraq published from Karachi. The journal is also published online on its site http://www.ishraqdawah.com

Answered by this author