کعبہ میں بت کب اور کیسے رکھے گئے اور کس نے رکھے؟

سوال:

کعبہ میں بت کب اور کیسے رکھے گئے اور کس نے رکھے؟


جواب:

یہ تاریخ کا سوال ہے اور دین سے متعلق نہیں ہے- اس میں کوئی حتمی بات نہیں کہی جا سکتی کہ بت کب رکھے گئے اور کس نے رکھے- بعض روایات ملتی ہیں- اگر آدمی ان پر مطمئن ہے تو ان کو تسلیم کیا جا سکتا ہے- عرب اساطیر اور بعض مسلمانوں کے عقائد کے مطابق عمرو بن لحی وہ شخص تھا جس نے سب سے پہلے جزیرہ نما عرب میں ابراہیمی مذاہب سے ہٹ کر بت پرستی متعارف کروائی۔ ان روایات میں آتا ہے کہ اس نے پہلا بت کعبہ میں نسب کر دیا- بہرحال اتنی بات طے ہے کہ کسی وقت بت رکھے گئے ہیں اور پھر یہ سلسلہ ایک لمبے عرصے تک جاری رہا یہاں تک کہ محمد رسول الله صلی الله علیہ وسلم نے کعبے کو دوبارہ پاک کر دیا اور اسے اس کی اصل حیثیت میں بحال کر دیا-

answered by: Mushafiq Sultan

About the Author

Mushafiq Sultan


Mushafiq Sultan, born in Kashmir in 1988, has been studying world religions from his school days. In 2009 Mushafiq came across the works of Ustaz Javed Ahmad Ghamidi and since then has been highly influenced by his thought. He has an exceptional interest in world religions, their philosophies and their mutual relations. He formally joined Al-Mawrid in 2016 as Assistant Fellow (Honorary). Presently, he is in charge of Al-Mawrid’s query service. In 2016, he published his first book ‘Muhammad (sws) in the Bible- An Exposition on Isaiah 42’. He has written articles on Islam, Christianity and Hinduism. He has also translated several articles of Javed Ahmad Ghamidi into Hindi.

Answered by this author