انسان تکبر کیوں کرتا ہے؟

سوال:

میرا سوال یہ ہے کہ انسان تکبر کیوں کرتا ہے؟ اس کی کیا وجوہات ہو سکتی ہیں اور اس کا کیا حل ہے کہ میرے اندر سے تکبر مکمل طور پر ختم ہو جائے اور عاجزی اور انکساری جاگ جائے؟ برائے مہربانی رہنمائی فرمائیے۔


جواب:

تکبر بڑائی کا وہ احساس ہے جس میں انسان دوسرے لوگوں کو حقیر سمجھنے لگتا ہے اورجب کبھی کوئی سچائی اور حق اس کے سامنے آتا ہے تو وہ اسے جھٹلا دیتا ہے۔ ایک صحیح حدیث(مسلم رقم133) میں تکبر یہی کی تعریف بیان ہوئی ہے۔ اس تکبر کی ایک بہت بڑی مثال شیطان ہے جس کو حکم دیا گیا تھا کہ وہ حضرت آدم علیہ السلام کے سامنے سجدہ کرے لیکن اس نے حضرت آدم کو حقیر جانا۔ یہ دوسرے کو چھوٹا اور حقیر سمجھنے کا عمل تھا۔ اس نے مزید یہ ظلم کیا کہ براہ راست اللہ تعالیٰ سے حکم پانے کے باوجود اسے ماننے سے انکار کردیا۔ یہ حق کا انکار تھا۔

اس تفصیل سے یہ بات واضح ہوئی کہ یہ اپنی بڑائی کا احساس ہے جو انسان کو تکبر پر آمادہ کرتا ہے۔ جہاں تک اس مسئلے کے حل کا سوال ہے تو ہمارے نزدیک تکبر سے بچنے کا طریقہ یہ ہے کہ انسان کو اس دنیا میں جو نعمت بھی حاصل ہو اور دوسروں سے فضلیت اور برتری کے جو پہلو بھی نظر آرہے ہوں، وہ انہیں ہمیشہ اللہ تعالیٰ کی عطا سمجھے۔ وہ اپنی ہر خوبی اور کمال کو اللہ تعالیٰ کی عنایت کے خانے میں ڈال دے اور یہ یقین رکھے کہ پرودگار جب چاہے اس سے یہ نعمت اور خوبی واپس لے سکتا ہے۔ یہ چیز انسان میں عجز و انکساری پیدا کرتی ہے۔ جب کبھی دل میں اپنی بڑائی کا خیال آئے یا دوسروں کو حقیر سمجھنے کا کوئی جذبہ پیدا ہو تو فوراً اپنے عیبوں اور کمزوریوں پر نظر کرے ۔ غلطی ہوجائے تو اللہ تعالیٰ سے معافی مانگے۔ یہی اس مسئلے کا حل ہے۔

answered by: Rehan Ahmed Yusufi

About the Author

Rehan Ahmed Yusufi


Mr Rehan Ahamd Yusufi started his career as a teacher and an educationist after obtaining Masters Degrees in Islamic Studies and Computer Technology from the Karachi University with distinction. He started his professional career by serving as a system analyst in a commercial organization. In 1997 he joined service in Saudi Arabia and later immigrated to Canada. 

Mr Rehan Ahmad Yusufi has been attached to people of learning from the beginning of his education career. In 1991, he was introduced to Mr Javed Ahmad Ghamid, a Pakistani religious scholar. After his return from Canada in 2002, Mr Yusufi joined Al-Mawrid, a Foundation for Islamic Research and Education, founded by Mr Ghamidi. Presently Mr Yusufi is an Associate Fellow at Al-Mawrid. His job responsibilities include propagation and communication of the religion as well as religious and moral instruction of people. He is heading a training center in Karachi which offers moral training and religious education to the masses.

Mr Rehan Ahamd Yusufi has very important works and booklets to his credit. The most important of his works include Maghrib sai Mashriq Tak, Urooj-o-Zawaal ka Qanoon awr Pakistan, and Wuhi Rah Guzar. He is also the Chief Editor of the Da’wah edition of the monthly Ishraq published from Karachi. The journal is also published online on its site http://www.ishraqdawah.com

Answered by this author