خوب صورتی اور بدصورتی کے معنی

سوال:

ہم نے حدیث میں یہ پڑھا ہے کہ اللہ تعالیٰ خوب صورتی کو پسند فرماتے ہیں۔ کیا اس کا مطلب یہ ہے کہ جو بدصورت ہیں ان کو اللہ تعالیٰ نا پسند کرتا ہے؟


جواب:

اس حدیث میں خوب صورتی اور بدصورتی کے وہ معنی نہیں ہیں، جو آپ سمجھ رہے ہیں۔ اس حدیث میں پوچھنے والے نے یہ نہیں پوچھا کہ سیاہ رنگ یا سفید رنگ میں فرق کیا ہوتاہے۔ انھوں نے پوچھا ہے کہ مجھے اچھا جوتا پسند ہے، مجھے اچھا لباس پسند ہے، کہیں اس سے تکبر تو نہیں ہو جائے گا۔ اس کے جواب میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے یہ فرمایا کہ

 'ان اللّٰه جميل ويحب الجمال' (مسلم: حدیث نمبر ٩١)۔
اللہ خوب صورت ہیں، خوب صورتی کو پسند کرتے ہیں۔ 

تکبر یہ نہیں ہے کہ تم اچھا جوتا پہنو یا اچھا لباس پہنو۔ اور پھر تکبر کی تعریف کی کہ تکبر یہ ہے کہ

 'بطر الحق وغمط الناس' (مسلم: حدیث نمبر ٩١)۔ 

آدمی کسی حق کے مقابلے میں اکڑ کر کھڑا ہو جائے، سرکشی اختیار کر لے اور لوگوں کو حقیر سمجھے۔ ہمارے خوب صورتی اور بد صورتی کے پیمانے بالکل اورہیں۔ خوب صورتی انسان کے چہرے میں بھی ہوتی ہے اور اس کی گفتگو میں بھی ہوتی ہے۔ دراصل ہم کسی ایک جگہ کے اوپر خو ب صورتی کو منطبق کر کے بیٹھ جاتے ہیں۔ اصولی بات اللہ تعالیٰ نے یہ فرمائی ہے کہ اگر آپ گورے ہوں یا کالے لیکن صاف ستھرے رہتے ہیں، بن سنور کے رہتے ہیں، آپ اچھا لباس پہنتے ہیں، اپنے گھر در کی سجاوٹ کرتے ہیں تو اللہ اسے پسند کرتے ہیں۔

answered by: Javed Ahmad Ghamidi

About the Author

Javed Ahmad Ghamidi


Javed Ahmad Ghamidi was born in 1951 in a village of Sahiwal, a district of the Punjab province. After matriculating from a local school, he came to Lahore in 1967 where he is settled eversince. He did his BA honours (part I) in English Literature and Philosophy from the Government College, Lahore in 1972 and studied Islamic disciplines in the traditional manner from various teachers and scholars throughout his early years. In 1973, he came under the tutelage of Amin Ahsan Islahi (d. 1997) (http://www.amin-ahsan-islahi.com), who was destined to who have a deep impact on him. He was also associated with the famous scholar and revivalist Abu al-A‘la Mawdudi (d. 1979) for several years. He taught Islamic studies at the Civil Services Academy for more than a decade from 1979 to 1991.

Answered by this author