کتاب مبین

سوال:

قرآن مجید میں ایک سے زیادہ بار کتاب مبین کے الفاظ آئے ہیں۔ میں یہ جاننا چاہتا ہوں کہ ان الفاظ سے قرآن کی مراد کیا ہے۔


جواب:

کتاب مبین کا لفظی مطلب واضح کتاب کا ہے اور یہ یہ ترکیب قرآن مجید میں کئی مقامات پر استعمال کی گئی ہے۔ قران کریم کے نظائر کا تتبع کرنے سے معلوم ہوتا ہے کہ یہ ترکیب دومفاہیم کے لیے میں استعمال کی گئی ہے۔ ایک کلام الہی اور دوسرا علم الہی کی تعبیر کے لیے۔

پہلے مفہوم کی ایک مثال سورہ یوسف کی آیت نمبر 1 اور سورہ شعرا کی آیت نمبر 2 ہے۔ارشاد باری تعالیٰ ہے۔

الر تِلْکَ آیَاتُ الْکِتَابِ الْمُبِیْنِ(1)

یہ الر ہے۔ یہ واضح کتاب کی آیات ہیں۔

یہاں مراد کتاب الہی یعنی قرآن مجید ہے۔ مبین سے یہاں مراد یہ ہے کہ یہ کتاب ایسی واضح ہدایت پر مشتمل ہے جو ہر قسم کی گمراہی کے اندھیروں میں ہدایت کی روشن شمع بن کر منور ہوتی ہے۔

دوسرے مفہوم کی ایک مثال سورہ انعام کی آیت 59ہے جس میں ارشاد ہوا۔

وَلاَ رَطْبٍ وَلاَ یَابِسٍ إِلاَّ فِیْ کِتَابٍ مُّبِیْنٍ(59)

نہ کوئی تر اور خشک چیز ہے، مگر وہ ایک روشن کتاب میں مندرج ہے۔

یہ علم الہی کی وسعت کی تعبیر ہے۔ اس کی حقیقت تو ہم نہیں جانتے مگر یوں سمجھتے ہیں کہ جس طرح ہمارے ہاں علم کتابوں میں درج ہوتا ہے اسی طرح ہر چیز کا علم اﷲ تعالیٰ کے ہاں ایک کتاب میں مندرج ہے، مگر یہ کتاب اتنی واضح اوربین ہے کہ کائنات کے علم کی تفصیل اپنی تمام تر پیچیدگیوں کے باوجود اس میں سے اخذ کرنا اتنا ہی آسان ہے جتنا دن کی روشنی میں کسی چیز کو دیکھنا۔

answered by: Rehan Ahmed Yusufi

About the Author

Rehan Ahmed Yusufi


Mr Rehan Ahamd Yusufi started his career as a teacher and an educationist after obtaining Masters Degrees in Islamic Studies and Computer Technology from the Karachi University with distinction. He started his professional career by serving as a system analyst in a commercial organization. In 1997 he joined service in Saudi Arabia and later immigrated to Canada. 

Mr Rehan Ahmad Yusufi has been attached to people of learning from the beginning of his education career. In 1991, he was introduced to Mr Javed Ahmad Ghamid, a Pakistani religious scholar. After his return from Canada in 2002, Mr Yusufi joined Al-Mawrid, a Foundation for Islamic Research and Education, founded by Mr Ghamidi. Presently Mr Yusufi is an Associate Fellow at Al-Mawrid. His job responsibilities include propagation and communication of the religion as well as religious and moral instruction of people. He is heading a training center in Karachi which offers moral training and religious education to the masses.

Mr Rehan Ahamd Yusufi has very important works and booklets to his credit. The most important of his works include Maghrib sai Mashriq Tak, Urooj-o-Zawaal ka Qanoon awr Pakistan, and Wuhi Rah Guzar. He is also the Chief Editor of the Da’wah edition of the monthly Ishraq published from Karachi. The journal is also published online on its site http://www.ishraqdawah.com

Answered by this author