نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے لیے درود و سلام

سوال:

قرآن مجید میں اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں کہ اللہ اور اس کے فرشتے نبی صلی اللہ علیہ وسلم پر رحمت بھیجتے ہیں، ایمان والو، تم بھی ان پر بہت زیادہ رحمت اور سلام بھیجو۔ میرا سوال یہ ہے کہ رسول اللہ پر درود تو ہم درود ابراہیمی کے ذریعے سے بھیجتے ہیں، لیکن سلام کے الفاظ کیا ہونے چاہییں؟


جواب:

نماز میں ہم التحیات پڑھتے ہوئے 

'السلام عليك ايها النبی ' 

 کے الفاظ ادا کرتے ہیں، اس سے ہم رسول اللہ پر سلام بھیجتے ہیں۔ یہی الفاظ ہم عام زندگی میں بھی پڑھ سکتے ہیں۔ حضور صلی اللہ علیہ وسلم پر سلام بھیجنے کا یہی طریقہ بتایا گیا ہے۔

درود و سلام سلامتی اور رحمت کی دعا ہے یعنی اللہ کے حضور میں یہ درخواست ہے کہ وہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم پر اپنی رحمت نازل فرمائے۔ یہ ہماری خیر خواہی کا تقاضا ہے کہ ہم ماں کے لیے دعا کریں، باپ کے لیے دعا کریں، اعزہ و اقربا کے لیے دعا کریں اور سب سے بڑھ کر اللہ کے پیغمبر کے لیے دعا کریں جس کے ذریعے سے ہمیں ہدایت ملی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ میں سمجھتا ہوں کہ یہ دعا ہمیں اپنے مسلمان بھائیوں کے لیے بھی ضرورکرنی چاہیے۔ (اگست ٢٠٠٤)

answered by: Javed Ahmad Ghamidi

About the Author

Javed Ahmad Ghamidi


Javed Ahmad Ghamidi was born in 1951 in a village of Sahiwal, a district of the Punjab province. After matriculating from a local school, he came to Lahore in 1967 where he is settled eversince. He did his BA honours (part I) in English Literature and Philosophy from the Government College, Lahore in 1972 and studied Islamic disciplines in the traditional manner from various teachers and scholars throughout his early years. In 1973, he came under the tutelage of Amin Ahsan Islahi (d. 1997) (http://www.amin-ahsan-islahi.com), who was destined to who have a deep impact on him. He was also associated with the famous scholar and revivalist Abu al-A‘la Mawdudi (d. 1979) for several years. He taught Islamic studies at the Civil Services Academy for more than a decade from 1979 to 1991.

Answered by this author