یا رسول اللہ پکارنا

سوال:

میں پوچھنا چاہتا ہوں کہ کیا ہم یا رسول اللہ پکار سکتے ہیں ۔ اگر نہیں تو پھر مدینہ منورہ میں روضۂ رسول کے سامنے کھڑ ے ہو کر یا رسول اللہ پکارنا کیوں صحیح قرار دیا جاتا ہے ؟ براہِ کرم وضاحت کر دیں ۔


جواب:

یا رسول اللہ عربی زبان کی ایک ترکیب ہے جس کا مطلب ہے ’’اے اللہ کے رسول‘‘۔ ہم آپ سے دریافت کرنا چاہتے ہیں کہ اس بات کا مطلب کیا ہے؟ آپ خود سوچیے کہ میں آپ کے سوال کے جواب میں صرف یہ لکھ کر بھیج دوں ’’اے احمد فراز‘‘ تو آپ میرے بارے میں کیا رائے قائم کریں گے؟ آپ یہی کہیں گے کہ یہ کیا بے معنی بات لکھ دی گئی ہے ۔ ٹھیک اسی طرح جب تک آپ یا رسول اللہ سے آگے کچھ نہیں کہتے ، تو یہ ایک نامکمل اور بے معنی بات ہوتی ہے ۔اس لیے محض یہ الفاظ خواہ روضۂ رسول کے سامنے کہے جائیں یا کہیں اور، یہ ہر حال میں ایک مہمل اور بے معنی بات ہے ۔ اس طرح کی باتوں پر اگر ہمارے معاشرے میں مذہبی مباحث ہورہے ہیں تو یہ ہمارے علمی اور عقلی دیوالیہ پن کا ثبوت ہے اور کچھ نہیں ۔

تاہم یہ انداز چونکہ مخاطبت کا ہے یعنی یہ الفاظ اس وقت بولے جاتے ہیں جب مخاطب سامنے موجود ہواس لیے اگر روضۂ مبارک پر درود و سلام ان الفاظ میں پڑھ لیا جائے کہ "یا رسول اللہ(اے اللہ کے رسول)، اللہ آپ پر اپنی رحمتیں اور سلامتی نازل فرمائے " اور حضور کو خطاب کرنے کی وجہ محض آپ کے روضۂ مبارک کا بالکل سامنے موجود ہونا ہو تو اس میں کوئی حرج نہ ہو گا۔

answered by: Rehan Ahmed Yusufi

About the Author

Rehan Ahmed Yusufi


Mr Rehan Ahamd Yusufi started his career as a teacher and an educationist after obtaining Masters Degrees in Islamic Studies and Computer Technology from the Karachi University with distinction. He started his professional career by serving as a system analyst in a commercial organization. In 1997 he joined service in Saudi Arabia and later immigrated to Canada. 

Mr Rehan Ahmad Yusufi has been attached to people of learning from the beginning of his education career. In 1991, he was introduced to Mr Javed Ahmad Ghamid, a Pakistani religious scholar. After his return from Canada in 2002, Mr Yusufi joined Al-Mawrid, a Foundation for Islamic Research and Education, founded by Mr Ghamidi. Presently Mr Yusufi is an Associate Fellow at Al-Mawrid. His job responsibilities include propagation and communication of the religion as well as religious and moral instruction of people. He is heading a training center in Karachi which offers moral training and religious education to the masses.

Mr Rehan Ahamd Yusufi has very important works and booklets to his credit. The most important of his works include Maghrib sai Mashriq Tak, Urooj-o-Zawaal ka Qanoon awr Pakistan, and Wuhi Rah Guzar. He is also the Chief Editor of the Da’wah edition of the monthly Ishraq published from Karachi. The journal is also published online on its site http://www.ishraqdawah.com

Answered by this author